اسٹاک مارکیٹ میں گراوٹ جاری رہنے کے آثار

0
image:yahoofinance

ممبئی: (یواین آئی) کووڈ۔ 19 وبا کے بے قابو دوسری لہر کی وجہ سے گھریلو اسٹاک مارکیٹوں میں تیسرے ہفتے گراوٹ دکھائی دی اور جس طرح نئے متاثرہ افراد کی تعداد بڑھ رہی ہے آنے والے ہفتے میں یہ جاری رہنے کے خدشات ہیں۔
آنے والے ہفتے میں مغربی بنگال اسمبلی انتخابات کے آخری دو مرحلے کے لئے ووٹنگ ہونا ہے. انتخابی نتائج کے سلسلے میں سرمایہ کاروں میں شکست کی صورت کی وجہ سے مارکیٹ پر دباؤ ہے۔ 27 اپریل اور 28 کو امریکی وفاقی ریزرو کے مالیاتی پالیسی اور معیشت کے سلسلے میں ایک میٹنگ ہونی ہے۔ فیڈ کے بیان کا اثر بھی مارکیٹ پر ہوگا۔
اس سے پہلے اسٹاک مارکیٹ میں گزشتہ ہفتے میں گراوٹ رہی۔ بدھ کو رام نومی کی چھٹیوں کی وجہ سے مارکیٹ میں چار دن ہی کاروبار ہوا۔ اس دوران پیر کو بڑی گراوٹ رہنے سے بی ایس ای کا سینسیکس 953.58 پوائنٹ یعنی 1.93 فیصد کی ہفتہ وار گراوٹ کے ساتھ جمعہ کو 47،878.45 پوائنٹس پر بند ہوا۔ نیشنل اسٹاک ایکسچینج کے نفٹی بھی 276.50 پوائنٹ یعنی1.89 فیصد ٹوٹ کر ہفتہ کو 14،341.35 پوائنٹس پر رہا۔ جمعرات کو چھوڑ باقی تین دن دونوں کلیدی انڈیکس سرخ نشان میں بند ہوئے۔
کووڈ -19 کے اب روزانہ تین لاکھ سے زیادہ نئے معاملے آنے لگے ہیں۔ دہلی سمیت کئی ریاستوں میں مختلف مدتوں کے لئے لاک ڈاؤں لگایا گیا ہے۔ اس سے بازار پر سرمایہ کاروں کا اعتماد کم ہوا ہے۔
درمیانی اور چھوٹی کمپنیوں پر دباؤ کم تھا۔ بی ایس ایس کے مڈکیپ 1.01 فیصد لڑھک کر 19،953.19 پوائنٹس پر اور اسمال کیپ 0.06 فی صد کی ہفتہ وار کمی کے ساتھ 21،005.01 پوائنٹس پر رہ گیا۔

آپ کے تاثرات
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here