پنجاب کا 50فیصد علاقہ وزیراعظم کے ہاتھ میں دینے پر کیا ملا؟

0
image: theindianexpress

کجریوال حکومت دہلی کے عوام کے حقوق کے لیے مسلسل لڑ رہی ہے،وزیراعلیٰ چنی سے راگھوچڈھا کا سوال
نئی دہلی(ایس این بی) : عام آدمی پارٹی کے پنجاب کے شریک انچارج اور ایم ایل اے راگھو چڈھا نے پنجاب میں بی ایس ایف کے دائرہ کار کو بڑھانے کے لیے پنجاب کے وزیر اعلیٰ سردار چرنجیت سنگھ چنی پر براہ راست حملہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ چنی نے ہتھیار ڈال دیے ہیں اور آدھے پنجاب کی چابی وزیر اعظم نریندر مودی کے ہاتھ میں دے دی ہے۔ وزیر اعلیٰ چنی نے یکم اکتوبر کو پی ایم مودی ، 4 اکتوبر کو گورنر اور 5 اکتوبر کو مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ اور 14 اکتوبر کو مودی حکومت سے ملاقات کرکے بی ایس ایف کا دائرہ کار 15 کلومیٹرسے بڑھا دیاہے،جو کہ50 کلومیٹر تک پھیل گیا ہے۔ مودی حکومت اور چنی حکومت نے میچ فکسنگ کے تحت پنجاب کے آدھے علاقے میں صدر راج نافذ کر دیا ہے۔ اب پنجاب کے کل رقبے میں سے 50362 مربع کلومیٹر ، 27600 کلومیٹرپر بی ایس ایف پنجاب پولیس سے مشورہ کیے بغیر علاقے میں امن و امان کے نام سے سب کچھ کر سکتی ہے۔ راگھو چڈھا نے کہا کہ بی جے پی سمجھ چکی ہے کہ وہ پنجاب میں کبھی حکومت نہیں بنا سکے گی۔ لہٰذا بالواسطہ طور پر پنجاب کے 23 اضلاع میں سے 12 پر قبضہ کر لیا گیا ہے۔ ان ریاستوں میں جہاں بی جے پی حکومت نہیں بنا سکتی، مودی حکومت وفاقی ڈھانچے پر براہ راست حملہ کرتی ہے۔دہلی میں بھی جب سے اے اے پی کی حکومت بنی ہے ، وفاقی ڈھانچے پر مسلسل حملہ کیا جا رہا ہے۔چڈھا نے آج روز ایوینیو میں ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ پنجاب کے وزیر اعلیٰ چرنجیت چنی نے پنجاب کا 50 فیصد وزیر اعظم نریندر مودی کے حوالے کر دیا ہے۔وزیر اعلیٰ چنی نے ہتھیار ڈال کر آدھے پنجاب کی چابیاں وزیر اعظم نریندر مودی کے حوالے کر دی ہیں۔50 فیصد یہ علاقائی دائرہ اختیار چنی نے مودی کو دیا ہے۔ یکم اکتوبر کو پنجاب کے نئے وزیر اعلیٰ سردار چرنجیت سنگھ چنی نے وزیر اعظم نریندر مودی سے ملاقات کی۔4اکتوبر کو انہوں نے پی ایم نریندر مودی کے مقرر کردہ گورنر سے ملاقات کی اور 5 اکتوبر کو انہوں نے ملک کے وزیر داخلہ امت شاہ سے ملاقات کی۔ اس ملاقات کے بعد انہوں نے خود ٹوئٹر پر یہ معلومات دی کہ میں وزیر داخلہ سے ملا اور میں نے انہیں بتایا کہ پنجاب کا ایک بڑا حصہ پاکستان کی بین الاقوامی سرحدسے لگتا ہے،جہاں سے منشیات اور ہتھیاروں کا بڑا کاروبار چل رہا ہے۔ میں وزیر داخلہ سے درخواست کرتا ہوں کہ وہ کچھ قدم اٹھائیں اور اس معاملے میں ایکشن لیں۔ یہ ہماری 550 کلومیٹر کی بین الاقوامی سرحد ہے۔بی جے پی حکومت اور مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ کو پنجاب میں اسے خود سنبھالنا چاہیے۔راگھو چڈھا نے اس کی تفصیل بتاتے ہوئے کہا کہ وزیر اعلی چرنجیت چنی نے پنجاب کے چھ اضلاع کو مکمل طور پر وزیر اعظم نریندر مودی کے حوالے کر دیا ہے۔ اس کے علاوہ پنجاب کے مزید چھ اضلاع میں سے بیشتر کو وزیر اعظم نریندر مودی کو سونپ دیا ہے۔ جن اضلاع میں بی جے پی تقریباًپوری طرح حکومت چلائے گی وہ پٹھان کوٹ ، گورداسپور ، امرتسر ، فیروز پور ، وغیرہ ہیں۔ اس کے ساتھ ہی 6اضلاع ، جو اب پی ایم نریندر مودی کی حکومت کے زیر انتظام ہوں گے ، ہوشیار پور ، جالندھر ، کپورتھلہ ، فرید کوٹ ، مختار اور موگا ہیں۔پنجاب میں ماجھا کا تقریباً پورا علاقہ مال وے کا ایک بڑا حصہ اور دوواپے کا ایک بڑا حصہ مرکز میں بیٹھی مودی حکومت چلائے گی۔

آپ کے تاثرات
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here