روس- یوکرین تنازع کے پر امن حل کے لیے روز اول سے کوشاں:اردگان

0
aljazeera.com

روس کا یک طرفہ فیصلہ ناقابل قبول
انقرہ(ایجنسیاں) : صدر رجب طیب اردگان نے کہا ہے کہ ہم لوہانسک اور دونیسک کے معاملے میں طرفین سے عالمی قوانین کے احترام کی امید کرتے ہیں۔
صدر نے کونگو جمہوریہ سے سنیگال روانگی کے دوران طیارے میں اخباری نمائندوں سے بات چیت کی۔صدر نے کہا کہ ترکی، روس اور یوکرین تنازع کے پر امن حل کے لیے روز اول سے کوشش کر رہا ہے،حالیہ صورت حال کے حوالے سے ہمارے امور خارجہ کا لوہانسک اور دونیسک کو روس کی جانب سے تسلیم کرنے پر منسک معاہدے کی خلاف ورزی کرنے کے بارے میں جو بیان سامنے آیا ہے وہ درست ہے، ہم یوکرین کی علاقائی سالمیت اور اس کی بقا کا احترام کرنے پر زور دیتے ہیں۔
صدر نے کہا کہ ہم روس کا اس بارے میں فیصلہ مسترد کرتے ہیں اور طرفین سے امید کرتے ہیں کہ وہ عالمی قوانین کا احترام کریں گے،بحیرہ اسود کے ہمسایہ ملک ہونے کے طور پر ہم ضروری تدابیر اختیار کر رہے ہیں۔اردگان نے یوکرینی صدرزیلنسکی کی سلامتی کونسل،ترکی۔جرمنی مشترکہ اجلاس کی تجویز سے متعلق کہا کہ اس معاملے میں اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے ارکان اور دیگر ممالک نے اپنی منشا ظاہر کی تو ہم بھی اس کا خیر مقدم کریں گے۔