سکیش چندرشیکھر کے الزامات کے بعدسندیپ گوئل کا تبادلہ

0

سنجے بینیوال ہوں گے تہاڑ جیل کے نئے ڈی جی
نئی دہلی، (اے این آئی):ٹھگ سکیش چندر شیکھر کی مدد کرنے کے الزام میں دہلی کی تہاڑ جیل کے ڈائرکٹر جنرل سندیپ گوئل کا تبادلہ کر دیا گیا ہے۔ گوئل کی جگہ سنجے بینیوال کو اب تہاڑ کا نیا ڈی جی بنایا گیا ہے۔ سکیش چندر شیکھر پر جیل میں تحفظ کے بدلے 10 کروڑ روپے کی جبراً وصولی کا الزام لگائے جانے کے چند دن بعد تہاڑ جیل کے ڈائرکٹر جنرل سندیپ گوئل کا تبادلہ کر دیا گیا ہے۔ گزشتہ دنوں سکیش نے دہلی کے ایل جی کو خط لکھ کر سندیپ گوئل پر کئی سنگین الزامات لگائے تھے۔
جمعہ کو دہلی کے محکمہ داخلہ کے ڈپٹی سیکریٹری شیلیش کمار کے جاری کردہ ایک حکم کے مطابق 1989 بیچ کے اے جی ایم یو ٹی کیڈر کے آئی پی ایس افسر اور ڈی جی جیل کا تبادلہ کر کے اگلے احکامات تک پولیس ہیڈ کوارٹر میں رپورٹ کرنے کو کہا گیا ہے۔ وہیں اب ان کی جگہ پر 1989 بیچ کے اے جی ایم یو ٹی کیڈر کے آئی پی ایس افسر سنجے بینیوال کو نیا ڈی جی جیل بنایا گیا ہے۔ بینیوال اس سے قبل اسپیشل کمشنر (پرسیپشن مینجمنٹ اینڈ میڈیا سیل) کے عہدے پر تعینات تھے۔ دہلی کی منڈولی جیل میں بند سکیش چندر شیکھر نے حال ہی میں دہلی کے لیفٹیننٹ گورنر وی کے سکسینہ کو ایک خط لکھا تھا جس میں الزام لگایا گیا تھا کہ ستیندر جین نے جیل میں اس کی حفاظت کو یقینی بنانے کےلئے 2019 میں اس سے 10 کروڑ روپے کی رشوت لی تھی۔ سکیش چندر شیکھر نے یہ خط 7 اکتوبر کو لکھا تھا۔ اس کے وکیل اشوک کے سنگھ نے یہ خط 8 اکتوبر کو لیفٹیننٹ گورنر کو دیا تھا۔خط میں مزید الزام لگایا گیا ہے کہ اس طرح ستیندر جین کو کل 10 کروڑ روپے اور ڈی جی جیل سندیپ گوئل کو 12.50 کروڑ روپے دیے گئے۔ خط میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ سکیش چندر شیکھر نے انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ (ای ڈی) کو بھی یہ جانکاری دی تھی۔ اس نے الزام لگایا تھا کہ جین اب تہاڑ میں بند ہیں، وہ ڈی جی جیل اور جیل انتظامیہ کے ذریعہ مجھے دھمکیاں دے رہے ہیں۔ مجھے ہائی کورٹ میں دائر شکایت کو واپس لینے کےلئے کہا جا رہا ہے اور مجھے شدید ہراساں کیا جا رہا ہے۔