سپریم کورٹ کی آلودگی پر مرکز اور دہلی حکومت کی سرزنش، مستقل حل تلاش کریں

0
Image:IndiaTVNews

نئی دہلی: (یو این آئی) سپریم کورٹ نے ایک بار پھر مرکز اور دہلی حکومت کی کھنچائی کی ہے اور ان سے کہا ہے کہ وہ قومی راجدھانی خطہ میں فضائی آلودگی کے مسئلے کا مستقل حل نکالیں۔ سپریم کورٹ نے دہلی حکومت کو حکم دیا ہے کہ وہ آلودگی کو کم کرنے کے لیے قومی راجدھانی دہلی میں لگائی گئی پابندیوں کو اگلے دو دن تک جاری رکھے۔ چیف جسٹس این۔ وی رمنا، جسٹس ڈی وائی۔ چندر چوڑ اور جسٹس سوریہ کانت آج اسکول کے طالب علم آدتیہ دوبے کی طرف سے دائر مفاد عامہ کی عرضی کی سماعت کر رہے ہیں۔ عدالتی احکامات کی تعمیل سے متعلق رپورٹ بدھ کو ریاستی حکومتوں کو پیش کی گئی، لیکن مرکزی حکومت نے اسے داخل نہیں کیا۔ مرکزی حکومت نے کہا کہ وہ آلودگی کی صورتحال اور اس سے نمٹنے کے اقدامات پر ریاستی حکومتوں سے معلومات لینے کے بعد بنچ کے سامنے اپنی رپورٹ پیش کرے گی۔ سماعت کے دوران مرکزی اور ریاستی حکومتوں کی جانب سے آلودگی کو کم کرنے کے لیے کیے گئے فوری اقدامات کے بارے میں جانکاری دیتے ہوئے کہا گیا کہ آلودگی پہلے کی نسبت کم ہوئی ہے اور آنے والے وقت میں اس میں مزید کمی کا اظہار کیا گیا ہے۔ ان کی دلیل پر بنچ نے کہا کہ ہوا کی وجہ سے آلودگی کی سطح کم ہو سکتی ہے۔ عدالت نے کہا کہ ہم اس مسئلے کا مستقل حل چاہتے ہیں۔

آپ کے تاثرات
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here