ہندوستان میں ہندو برسوں سے سمجھوتہ کر رہے ہیں، اب یہ بند ہونا چاہیے: سبرامنیم سوامی

0

نئی دہلی : (ایجنسی)ان دنوں ملک میں ایک بار پھر ‘ہندو-مسلم’ کو لے کر بحث چھڑی ہوئی ہے۔ اذان کے دوران لاؤڈ اسپیکر ہٹانے اور ہنومان چالیسہ پڑھنے کو لے کر ہونے والے ہنگامے کے درمیان اب بی جے پی کے رکن پارلیمنٹ سبرامنیم سوامی کا بڑا بیان سامنے آیا ہے۔ بی جے پی کے راجیہ سبھا کے رکن پارلیمنٹ سبرامنیم سوامی نے کہا ہے کہ ہندوستان میں ہندو برسوں سے سمجھوتہ کر رہے ہیں اور یہ چیزیں اب بند ہونی چاہئیں۔

میسور ہندو فورم سے خطاب کرتے ہوئے سبرامنیم سوامی نے کہا کہ مصر 21 سال میں مکمل طور پر مسلم ملک بن گیا۔ عراق ایک مسلم ملک بن گیا۔ انہوں نے کہا کہ 50 سال میں یورپ عیسائی بنا۔ میسور ہندو فورم سے خطاب کرتے ہوئے سبرامنیم سوامی نے کہا کہ ہم ہزاروں سال تک لڑنے کے بعد ہندوستان میں 80 فیصد ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اس بات میں کوئی دو رائے نہیں ہونی چاہئے کہ ہندوستان کی ثقافت ہندو ہے خواہ وہ کسی بھی مذہب کا ہو۔ امریکہ میں رہنے والے ہندوستانی بھی ہندو تہوار مناتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان میں ہم (ہندو) برسوں سے سمجھوتہ کر رہے ہیں، لیکن یہ چیزیں اب بند ہو جانی چاہئیں۔