پرائیویسی پالیسی پر وہاٹس ایپ کو دھچکا، جانچ پر روک لگانے سے انکار

0

نئی دہلی،(ایجنسیاں) :ایسا لگتا ہے کہ وہاٹس ایپ اپنی2021 کی پرائیویسی کی پالیسی کے ساتھ پھنس گیا ہے۔ تحقیقات پر روک لگانے کی ان کی ایک درخواست سپریم کورٹ نے خارج کر دی ہے۔ سوشل میڈیا پلیٹ فارم فیس بک اور وہاٹس ایپ کی پیرنٹ کمپنی میٹا پلیٹ فارمز انکارپوریشن نے سپریم کورٹ میں ایک درخواست داخل کی تھی۔ اس میں مسابقتی کمیشن آف انڈیا (سی سی آئی) کے 2021 کےلئے وہاٹس ایپ کی اپ ڈیٹ کردہ پرائیویسی پالیسی کی جانچ کے حکم کو چیلنج کیا گیا تھا۔ تاہم جمعہ کو عدالت نے اسے مسترد کر دیا۔جسٹس ایم آر شاہ اور جسٹس سدھانشو دھولیا کی بنچ نے کہا کہ سی سی آئی ایک آزاد اتھارٹی ہے اور اس سے پہلے شروع کی جانے والی کارروائی پر روک نہیں لگائی جا سکتی۔ اس کے ساتھ ہی عدالت نے دہلی ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف درخواستوں کو خارج کر دیا، جس میں چیف نیشنل مسابقتی ریگولیٹر کی طرف سے تحقیقات کا حکم دیا گیا تھا۔بنچ نے کہاکہ ’ہم نے وکلاء(متعلقہ فریقوں) کے دلائل کو سنا ہے اور اس میں عدالت کی مداخلت کی ضرورت نہیں ہے۔ سی سی آئی مسابقتی ایکٹ 2002 کی شقوں کی کسی بھی خلاف ورزی پر غور کرنے کےلئے ایک آزاد اتھارٹی ہے… سی سی آئی کو مسابقتی ایکٹ، 2002 کی مبینہ خلاف ورزی کی تحقیقات سے نہیں روکا جا سکتا‘۔بنچ نے کہا کہ ہائی کورٹ کی طرف سے دی گئی کسی بھی آبزرویشن کو عارضی/ پہلی نظر کے طور پر سمجھا جانا چاہئے۔ دہلی ہائی کورٹ نے 28 ستمبر کو فیس بک انڈیا کی اس درخواست کو مسترد کر دیا تھا جس میں سی سی آئی کے 2021 کےلئے وہاٹس ایپ کی اپ ڈیٹ کردہ پرائیویسی پالیسی کی جانچ کرنے کے حکم کو چیلنج کیا گیا تھا۔