زبردستی تبدیلیٔ مذہب کے خلاف قانون سازی ضروری: کجریوال

0
https://indianexpress.com/

Arvind Kejriwalجالندھر (ایس این بی) دہلی کے وزیر اعلیٰ اروند کجریوال نے کہا ہے کہ مذہب ایک ذاتی معاملہ ہے اور کسی کو بھی اس بات کی اجازت نہیں دی جاسکتی کہ اس کی مرضی کے خلاف اس کا مذہب تبدیل کرایا جائے۔ مگر کسی کو بلاوجہ پریشان نہیں کیا جانا چاہیے۔آپ کے کنوینر اور دہلی کے وزیراعلیٰ اروند کجریوال نے جالندھر میں تاجروں کے ساتھ ٹاؤن ہال میٹنگ کی اور شہروں کی ترقی کے لیے 11 نکاتی ایجنڈے پر کام کرنے کا یقین دلایا، یہ کہتے ہوئے کہ پنجاب میں ہماری حکومت بنی تو اگلے 5 سالوں میں کوئی ٹیکس نہیں بڑھے گا۔ پنجاب میں بھی ریڈ بند کریں گے، موجودہ انڈسٹری کے مسائل حل کریں گے اور نئی صنعتیں لگانے کے لیے مراعات دیں گے۔ 24 گھنٹے مفت بجلی اور 24 گھنٹے پینے کا پانی فراہم کریں گے۔ دہلی کی طرح پنجاب میں بھی ڈور اسٹیپ ڈلیوری شروع کی جائے گی اور بجلی کی تاریں زیر زمین ہوں گی. اسپتال اور کلینک کو بہتر کریں گے اور اس میں تمام علاج مفت ہوگا۔ سی سی ٹی وی کیمرے لگائے جائیں گے، بازار کی سڑکیں اور پارکنگ ٹھیک کی جائیں گی۔ ہم دہلی میں حکومت چلا رہے ہیں۔ دہلی کے اسکول اب بہت اچھے ہو گئے ہیں۔ اس بار سرکاری اسکولوں کا بارہویں کا نتیجہ 99.6 فیصد آیا۔ ہندوستان کی تاریخ میں ایسا کبھی نہیں سوچا تھا۔ آپ دوسری ریاستوں پر ایک نظر ڈال سکتے ہیں۔ کہیں 45 فیصد، کہیں 50 فیصد، کہیں 55 فیصد نتائج۔ ہمارے سرکاری اسکولوں کے بچوں کے داخلے آئی آئی ٹی میں ہو رہے ہیں۔ اس بار 350 بچوں کو داخل کیا گیا ہے۔ ہمارے بچے NEET پاس کر رہے ہیں، وکالت کر رہے ہیں اور اب ہمارے سرکاری اسکولوں کے بچے روانی سے انگریزی بول رہے ہیں۔ آپ دہلی کے کسی تاجر کو فون کرکے پوچھیں گے کہ کیا کیجریوال پیسے لیتے ہیں؟ اگر وہ کہتے ہیں کہ کیجریوال یا کسی وزیر نے پیسے لیے تو مجھے ووٹ نہ دیں۔ آپ کو یہ بھی پوچھنا چاہیے کہ کیا آپ کیجریوال حکومت سے خوش ہیں؟ اگر وہ انکار کرتا ہے تو مجھے ووٹ مت دینا۔ میں چیلنج کرتا ہوں کہ کوئی کانگریسی آکر کہے کہ راجستھان میں میری حکومت ہے اور وہاں کے کسی تاجر کو بلا کر پوچھیں۔ یا اگر کوئی بی جے پی والا آکر کہے کہ مدھیہ پردیش میں میری حکومت ہے تو وہاں فون کرکے پوچھ لیں۔ لیکن آج میں چیلنج کر رہا ہوں کہ اگر آپ دہلی میں فون کر کے پوچھیں کہ کیجریوال حکومت بے کار ہے تو مجھے ووٹ نہ دیں۔ یہ بہت بڑی بات ہے۔آپ کے کنوینر اروند کجریوال نے کہا کہ ہم نے دہلی میں چھاپہ مار کارروائی روک دی ہے۔ اب یہاں تاجروں کے پاس لال نہیں ہے۔ دہلی میں ہم نے تاجروں کو واٹس ایپ نمبر دیا کہ اگر کوئی انسپکٹر آئے تو اس کی تصویر لے کر بھیج دیں۔ اس کے بعد تمام انسپکٹر گھر بیٹھ گئے۔ ہم نے تاجروں کے چھوٹے چھوٹے قانونی مسائل حل کئے۔ پنجاب میں بھی تاجروں کے تمام مسائل حل کریں گے۔