میتھیو ہیڈن اور ورنان فلینڈر ٹی 20 ورلڈ کپ کے لیے پاکستان کے کوچ مقرر

0
Image: COC

کراچی، (یواین آئی):پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے نومنتخب چیئرمین رمیز راجا نے اعلان کیا ہے کہ آئندہ ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ کے لئے آسٹریلیا کے سلامی بلے باز یتھیو ہیڈن کو بلے بازی کوچ اور جنوبی افریقہ کے تیزگیندباز ورنان فلینڈر کو گیندبازی کوچ مقرر کیا گیا ہے۔
نومنتخب چیئرمین پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) رمیز راجا نے اعلان کیا ہے کہ ورلڈ کپ کے لیے پی سی بی نے میتھیو ہیڈن کو قومی ٹیم کے بیٹنگ اور ورنا فلینڈر کی باؤلنگ کوچ کی خدمات حاصل کرلی ہیں۔عہدہ سنبھالنے کے بعد لاہور میں اپنی پہلی پریس کانفرنس کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ‘وزیر اعظم نے میری صلاحیتوں پر اعتماد کا اظہار کیا، اتنے بڑے لیڈر کے اعتماد کے اظہار سے کچھ کرنے کی خواہش میں اضافہ ہوا’۔ان کا کہنا تھا کہ ‘آسان کام نہیں، ہم سب کو ٹیسٹ کیا جائے گا’۔انہوں نے کہا کہ ‘مصباح الحق اور وقار یونس کا بھی شکریہ ادا کرنا چاہوں گا جنہوں نے محنت اور دیانت داری سے کام کیا ہے’۔رمیز راجا کا کہنا تھا کہ ‘پاکستان کی تاریخ میں بہت کم کرکٹرز اس بورڈ کے چیئرمین بنے ہیں’۔
انہوں نے کہا کہ ‘کمنٹری باکس کا آسان عہدہ چھوڑ کر یہاں آنا مشکل تھا، چاہوں گا کہ کھل کر سب رد عمل دیں تاکہ مجھے اپنے بارے میں معلوم رہے’۔ان کا کہنا تھا کہ ‘میرے نظریہ واضح ہے، ہمیں اپنی کرکٹ کے ڈائریکشنز کو بدلنے کی ضرورت ہے، اس کے لیے چند طویل المدتی چند کم مدت کے اہداف ہیں جنہیں حاصل کرنا ہے’۔پی سی بی کےچیئرمین کا کہنا تھا کہ ‘کرکٹ بورڈ کی کارکردگی کا انحصار کرکٹ ٹیم پر ہوتا ہے، ہمیں اپنی کوچنگ پر نظر ثانی کرنی ہوگی’۔ان کا کہنا تھا کہ ‘جب تک ہماری صلاحیتیں بہتر نہیں ہوں گی، تکنیک درست نہیں ہوں گی ہم بہتر ٹیم نہیں بن سکتے، ہمیں اب اپنی تکنیک کو بہتر بناتے ہوئے چیلنجز سے گزرنے پر بات کرنے کی ضرورت ہے’۔
انہوں نے اعلان کیا کہ ‘پاکستان میں 192 فرسٹ کلاس پلیئرز کرکٹ کھیل رہے ہیں، سب کی ریٹینر شپ میں لاکھ روپے کا اضافہ کیا ہے، اس سے نظام میں ایک اطمینان کی صورتحال پیدا ہوگی، کرکٹ چیئرمین کے طور پر سمجھتا ہوں کہ پیسا وہاں لگے جہاں کرکٹرز اور نظام کی بھلائی ہو’۔پریس کانفرنس کے دوران انہوں نے یہ بھی اعلان کیا کہ ‘ورلڈ کپ کے لیے بیٹنگ کوچ میتھیو ہیڈن اور باؤلنگ کوچ ورنان فلینڈر کی بطور کوچ خدمات حاصل کرلی ہیں’۔
انڈر 19 کرکٹ کے حوالے سے بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ‘انڈر 19 کا ٹی 20 ورلڈ لیگ کا آئندہ سال منصوبہ بنائیں گے، ہم اب تک انہیں ایسا ماحول نہیں دے رہے تھے کہ ان میں پیشہ ورانہ صلاحیتیں آسکیں’۔
ان کا کہنا تھا کہ سابق کرکٹرز انڈر 19 کرکٹ کو بہتر بنانے میں بہتر کردار ادا کرسکتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ امید کرتا ہوں کہ آگے جاکر 3 مہینے کی سمر اور 3 مہینے کی ونٹر لیگ کروائیں گے، کلبوں کو بہتر بنائیں گے اور کوئی بھی کلب اگر ایک بھی انٹرنیشنل ہیرو ہمیں فراہم کرے گا تو کلب کے اخراجات پی سی بی اٹھائے گا۔رمیز راجا کا کہنا تھا کہ ‘میرا کام فیصلہ سازی کرنا ہے، مجھے معلوم ہے کہ یہ بہت مشکل کام ہے، چاہوں گا کہ چیئرمین کی جگہ ٹیم کے کپتان کی دخل اندازی زیادہ ہو اور، پاکستانی ٹیم خوف سے باہر نکلے اور ٹیم کے ہر کھلاڑی اپنی ذمہ داری کو سمجھے’۔
ان کا کہنا تھا کہ ‘چاہتا ہوں کہ دنیا میں جب کرکٹ لوگ دیکھیں تو پاکستان کی ٹیم دیکھ کر چینل تبدیل نہ کریں، عوام کو ہر تھوڑے عرصے میں بہتری دیکھنے کو ملے گی’۔انہوں نے کہا کہ ‘میں یہاں پر گالیاں کھانے نہیں آیا ہوں، کسی وجہ سے لایا گیا ہے، تجاویز سر آنکھوں پر، ناقدین کو تعمیری جواب دیا جائے گا’۔

آپ کے تاثرات
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here