بہارکے 15 اضلاع سیلاب کی زد میں، 5 لوگوں کی موت

0
Image: The Economics Times

متاثرین کو6ہزار دے کر نتیش حکومت اپنی پیٹھ تھپتھپا رہی ہے: تیجسوی
پٹنہ: (یواین آئی) بہارکی نائب وزیراعلیٰ رینودیوی نے آج کہا کہ ریاست کے 15 اضلاع کے 82 بلاک سیلاب کی زدمیں ہیں اوراس سے اب تک پانچ افرادکی موت ہوئی ہے۔نائب وزیراعلیٰ اور ڈیزاسٹر مینجمنٹ کی وزیررینو دیوی نے یہاں ہفتہ کے روز بھارتیہ جنتاپارٹی (بی جے پی) کے ریاستی ہیڈکوارٹر میں پروگرام کے بعد صحافیوں سے بات چیت میں کہا کہ فی الحال ریاست میں 15 اضلاع کے 82 بلاک سیلاب کی زد میں ہیں۔ ان میں پٹنہ، مظفرپور، دربھنگہ، سہرسہ، سپول، لکھی سرائے، بھاگل پور، بھوج پور، کھگڑیا، سارن، بکسر، بیگوسرائے، کٹہار، مونگیر اورسمستی پور اضلاع شامل ہیں۔محترمہ رینودیوی نے کہا کہ ان 15 اضلاع کے 82 بلاک میں راحت اور بچاو کیمپ چلائے جارہے ہیں۔ اسی طرح کل 178 کمیونٹی کچن چلائے جا رہے ہیں، جہاں ایک لاکھ سے زائد افراد کے لئے کھانے کاانتظام کیاگیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ متاثرہ علاقوں میں ڈاکٹروں کی ٹیم بھی کیمپ کررہی ہے اور ضرورت ہونے پر لوگوں کی جانچ کے ساتھ ہی دوا بھی دی جارہی ہے۔ اس کے علاوہ مویشیوں کے لئے بھی انتظامات کئے گئے ہیں۔
نائب وزیرنے کہا کہ اب تک سیلاب سے پانچ لوگوں کی موت ہونے کی اطلاع ہے۔ حکومت ہرسطح پر اقدامات کررہی ہے جس سے متاثرہ علاقوں میں لوگوں کوکسی طرح کی پریشانی نہ ہو۔ متاثرہ علاقوں میں 1729 کشتیاں چلائی جارہی ہے اورنیشنل ڈیزاسٹر رسپانس فورس (این ڈی آر ایف) و اسٹیٹ ڈیزاسٹر رسپانس فورس (ایس ڈی آر ایف) کے اہلکار تعینات کیے گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ندیوں کے بڑھتی آبی سطح پرمحکمہ آبی وسائل کے انجینئر 24 گھنٹے گہری نظررکھے ہوئے ہیں۔نائب وزیراعلیٰ نے اپوزیشن لیڈر تیجسوی یادو کے راگھوپور کے سیلاب متاثرہ علاقے کے دورہ کے تعلق سے کہا کہ ان کے پاس صرف ایک اسمبلی حلقہ ہے جبکہ میرے پاس ریاست کی ذمہ داری ہے۔ اپنی ذمہ داریاں بخوبی اداکررہی ہوں۔ وزیراعلیٰ نتیش کمار مسلسل سیلاب سے متاثرہ علاقوں کادورہ کرکے افسران کے ساتھ میٹنگ کررہے ہیں۔محترمہ رینودیوی نے اپوزیشن لیڈر کے سیلاب متاثرین کو چھ ہزار روپے دینے کے بجائے مزید رقم دینے پر انہوں نے کہا کہ جتنابجٹ ہے اس حساب سے کام کیاجارہا ہے۔ ان کاکہناتھاکہ اس پرمرکزی حکومت کی گائیڈلائن کے مطابق ہی کام کیا جاتاہے۔
بہار قانون ساز اسمبلی میں قائد حزب اختلاف تیجسوی پرساد یادو نے آج کہا کہ سیلاب سے متاثرہ علاقوں میں راحت کے نام پر حکومت صرف چھ ہزار روپے دے کر اپنی پیٹھ تھپتھپا رہی ہے۔
ہفتہ کو مسٹر یادو نے راشٹریہ جنتا دل (آر جے ڈی) کے رہنماؤں کے ساتھ پٹنہ سے متصل اپنے اسمبلی حلقہ راگھوپور کے دیارہ کے سیلاب سے متاثرہ علاقوں کا دورہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ متاثرہ علاقوں میں کمیونٹی کچن شروع کر دیے گئے ہیں تاکہ لوگوں کو کھانے پینے کے کسی بھی مسئلے کا سامنا نہ کرنا پڑے۔ اس کے ساتھ متاثرہ علاقوں میں کشتی کے سفر کا بھی انتظام کیا گیا ہے۔
اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ مہنگائی کے اس دور میں ریاستی حکومت متاثرہ علاقوں کے لوگوں کو ریلیف کے لیے صرف چھ ہزار روپے دے رہی ہے جو کہ کافی نہیں ہے۔ یہ کام کرنے والا نہیں ہے۔ انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ متاثرین کو امداد کے طور پر مزید رقم دی جائے۔

آپ کے تاثرات
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here