ممبئی میں ہنرہاٹ: 9لاکھ روزگار فراہم کیے گئے :مختار عباس نقوی

0

ممبئی (یواین آئی) آج یہاں شمال مغربی ممبئی کے باندرہ کر لامپلیکس میں40و یں ہنرہاٹ کا افتتاح کرتے مرکزی وزیر برائے کھیل کود اور اطلاعات ونشریات انوراگ ٹھاکر نے کہاکہ گزشتہ 7 سال سے منعقد کیے جانے والے ہنرہاٹ کے دوران9لاکھ کے زائد روزگار فراہم کیے گئے ہیں اور وزیراعظم نریندر مودی کی سرپرستی ونقوی صاحب کی نگرانی میں یہ ممکن ہوسکا ہے ۔ انہوں نے مزید کہاکہ ہنرہاٹ میں ملک بھر سے ایک ہزار سے زیادہ ہنرمند اور کاریگروں نے شرکت کی ہے، صدیوں سے ہمارے سماج وثقافت کے حصہ رہے ،ان فن کاروں کوکئی دہائیوں سے نظر انداز کیا جانے لگا،لیکن حال میں ہنرہاٹ کے تحت ان کے فن کاروں کی حوصلہ افزائی کی گئی اور انہیں بہتر نتائج ملنے سے روزگار حاصل ہوئے ہیں۔ اس سے قبل مرکزی وزیر برائے اقلیتی اموراور ڈپٹی لیڈر راجیہ سبھا مختار عباس نقوی کے ذریعہ مہمانوں کاخیرمقدم کیااور مطلع کیاکہ ممبئی میں 16 سے 27 اپریل 2022 تک چالیس واں ہنرہاٹ منعقد کیاگیا ہے ، جس میں متعددسے ریاستوں اورمرکز کے زیر انتظام علاقوں کے تقریبا 1000کاریگر اور دیگر فن کاروں نے حصہ لیا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ ان ہنرہاٹ سے ایک عام فن کار کو حوصلہ ملاہے اور خود کے لیے روزگار کے بجائے ،وہ اب روزگار فراہم کرنے کا کام کررہے ہیں۔ نقوی نے کہا کہ ہنرہاٹ وزیر اعظم نریندر مودی کے وکل فارلوکل اور اتم نربھربھارت کے مطالبے کو تقویت دے رہی ہے۔ اس کے علاوہ ، ملک کے دور دراز علاقوں سے آبائی فنون اور دست کاری کو فروغ دینے کے لیے ، ہنر ہاٹ نے صرف 7سال کے مختصرعر صے میں 9لاکھ سے زیادہ کاریگروں کو روز گار کے مواقع فراہم کیے ہیں ۔
ان سے مستفید ہونے والوں میں 50 فیصد سے زیادہ خواتین کاریگر ہیں۔ ہنر ہاٹ نے ان خواتین کاریگروں کی امنگوں کو پرلگادیئے ہیں۔ اوسطا 8 سے 10 لاکھ لوگ ہر ہنر ہاٹ کا دورہ کر چکے ہیں ۔لہذ اکئی کروڑ لوگوں نے دور دراز علاقوں کی دستکاری اور دستکاریوں کو فروغ دیاہے ۔
ملک بھر میں اب تک 39،ہنر ہاٹ منعقد کیے گیے ہیں،تا کہ عام آدمی دیسی مصنوعات خرید سکیں، کاریگروں اور کاریگروں کی حوصلہ افزائی کی جاسکیں اور ہنر باٹ میں مختلف سماجی اور ثقافتی پروگراموں سے لطف اندوز ہوں ۔ مختار عباس نقوی نے کہا کہ ہنر باٹ نے ملک کو ایک پلیٹ فارم فراہم کیا ہے اور انہیں قومی اور بین الاقوامی شناخت دی ہے ۔ ہنر ہاٹ مقامی کو عالمی برانڈ بنانے کا ایک مضبوط پلیٹ فارم بن گیا ہے ۔ نقوی نے کہا کہ دستکاری سے وابستہ خاندانوں کی نوجوان نسل اپنی روایتی آبائی وراثت سے دور ہوتی جارہی ہے ۔ مارکیٹ اور مواقع کی کمی کی وجہ سے یہ میراث معدوم ہونے کے دہانے پڑتھی لیکن ، وزیر اعظم نریندرمودی نے مقامی کاریگروں اور فن کاروں کے آبائی ورثے کے تحفظ اور فروغ کے لیے مختلف موثر اقدامات کیے ہیں۔ اتر پردیش، راجستھان، دہلی، نا گالینڈ، مدھیہ پردیش ، منی پور، بہار، آندھرا پردیش، جھارکھنڈ ، گوا، پنجاب، اتراکھنڈ، ہماچل پردیش ، لداخ، کرناٹک، گجرات، ہریانہ، جموں و کشمیر، مغربی بنگال ،مہاراشٹر کے کاریگر اور۔ چھتیس گڑھ تمل ناڈو، کیرالہ اور ملک کے دیگر مقامات مبنی ہنر ہاٹ میں اپنے ساتھ دیسی مصنوعات لائے ہیں ۔ اس موقع پر سابق مرکزی وزیر پرکاش جاؤڈیکر ،سابق وزیراعلی دیویندر فڈنویس اور دیگر سے خطاب کیااور گھریلو اور دیسی کاریگروں اور فن کاروں کی حوصلہ افزائی پر مختار نقوی کی ستائش کی۔ہنرہاٹ باندرہ کرلاکمپلیکس میں 27،اپریل تک جاری رہے گی۔