ایلن مسک نے ٹوئٹر کی صفائی شروع کر دی، کئی ملازمین کو باہرکا راستہ دکھایا

0

اس اینجلس، (یو این آئی): مائیکرو بلاگنگ سائٹ ٹویٹر کے نئے مالک ایلن مسک نے جمعہ کو پوری دنیا میں کارکنوں کو فارغ کرنا شروع کر دیا۔بی بی سی کی رپورٹ میں کہا گیا کہ پوری دنیا میں ٹوئٹر کے لیے کام کرنے والے کچھ لوگوں نے بتایا کہ وہ اپنی کمپنی کے لیپ ٹاپ سے خود بخود لاگ آ¶ٹ ہو چکے ہیں۔ تمام ملازمین جمعہ کو پیسیفک وقت کے مطابق صبح 9 بجے تک “ٹوئٹر پر آپ کا کردار” کے موضوع کے ساتھ ای میل موصول کرنے کے لیے تیار ہیں۔کمپنی کے ملازمین کا ایک جذباتی فیڈ جس میں ہیش ٹیگ “ون ٹیم” ٹویٹر پر ٹرینڈ کر رہا ہے کہ وہ اپنی ملازمتیں کھو چکے ہیں۔اس سارے معاملے پر لوگ حیرت کا اظہار کر رہے ہیں کہ آخر ہو کیا رہا ہے ، کچھ خاموش ہیں، کچھ کہہ رہے ہیں کہ اس ٹائم زون کی حدود میں نہ آنے کی وجہ سے انہیں کچھ پتہ نہیں ہے ۔برطانیہ میں ٹوئٹر کے سینئر کمیونٹی مینیجر سائمن بیل مین نے کہا کہ انہیں کمپنی سے نکال دیا گیا ہے اور وہ اپنے لیپ ٹاپ سے لاگ آ¶ٹ ہو گئے ہیں۔ سب کو ای میل بھیجی گئی ہے کہ لوگوں کو نوکری سے نکال دیا جائے گا۔ ایک گھنٹے بعد ملازمین نے اپنے لیپ ٹاپ سے لاگ آ¶ٹ کرنا شروع کر دیا اور جی میل اور سلیک تک ان کی رسائی بھی منقطع کر دی گئی۔انہوں نے کہاکہ “میں کئی پروجیکٹس پر کام کر رہا تھا جن پر لاس اینجلس کے مطابق کام کرنا تھا، اس لیے جب یہ چھٹنی شروع ہوئی تو میں ابھی بھی کام پر تھا۔انہوں نے کہا کہ اس طرح کی چھٹنیوں سے ٹیلنٹ کا خاتمہ ہوگا، جو پوری ٹیک انڈسٹری کے لیے ایک نئی شکل اختیار کرے گا۔بی بی سی نے رپورٹ کیا کہ ایک اندرونی ای میل میں سوشل میڈیا کمپنی نے کہا تھا کہ کٹوتیاں ‘ٹویٹر کو صحیح راستے پر لانے کی کوشش’ تھی۔ فرم نے کہا کہ اس کے دفاتر عارضی طور پر بند رہیں گے اور بیج ایکسس معطل کر دی جائے گی۔ارب پتی مسک گزشتہ ہفتے 44 بلین ڈالر کے معاہدے میں فرم کو خریدنے کے بعد ٹویٹر کے چیف ایگزیکٹو آفیسر ہوں گے ۔ٹویٹر نے ایک ای میل میں کہا کہ “ہم جمعہ کو اپنی عالمی افرادی قوت کو کم کرنے کے مشکل عمل سے گزریں گے ۔کمپنی نے کہاکہ “ہمیں یقین ہے کہ اس سے بہت سے افراد متاثر ہوں گے جنہوں نے ٹویٹر کے لیے قابل قدر تعاون کیا ہے ، لیکن بدقسمتی سے کمپنی کی کامیابی کو آگے بڑھانے کے لیے یہ اقدام ضروری ہے ۔کمپنی نے کہاکہ “ہر ملازم کے ساتھ ساتھ ٹویٹر سسٹم اور کسٹمر ڈیٹا کی حفاظت کو یقینی بنانے میں مدد کے لیے دفتر تک رسائی فوری طور پر محدود کر دی جائے گی۔ٹوئٹر کے مطابق متاثر نہ ہونے والے کارکنان کو ان کی کمپنی کے ای میل کے ذریعے مطلع کیا جائے گا۔ دریں اثنا، متاثرہ افراد کو ان کے ذاتی اکا¶نٹس کے ذریعے ‘اگلے اقدامات’ کے بارے میں مطلع کیا جائے گا۔ٹویٹر نے کہاکہ “ہماری تقسیم شدہ افرادی قوت کی نوعیت اور متاثرہ افراد کو جلد از جلد مطلع کرنے کی ہماری خواہش کو دیکھتے ہوئے اس عمل کے لیے رابطہ ای میل کے ذریعے ہوگا۔