دہلی سرکار کے 5اسکول ملک کے ٹاپ 10میں شامل

0
image: hindustantimes

تعلیمی عالمی درجہ بندی میں پہلے اور دوسرے نمبر پر دہلی کے سرکاری اسکول کا قبضہ:سسودیا
نئی دہلی (ایس این بی) :اروند کجریوال سرکارکی تعلیم کو ترجیح دینے کا نتیجہ ہے کہ آج ایجوکیشن ورلڈ کی درجہ بندی میں ہندوستان کے ٹاپ 10اسکولوں میں سے 5دہلی سرکارکے ہیں۔ اس سال تعلیمی عالمی درجہ بندی میں کجریوال سرکار کے اسکول پہلے اور دوسرے نمبر پر ہیں اور 2 اسکول نویں اور ایک دسویں نمبر پر پوزیشن حاصل کی ہے ۔ دہلی کی ٹیم ایجوکیشن کی اس کامیابی کو بیان کرتے ہوئے نائب وزیر اعلیٰ اور وزیر تعلیم منیش سسودیا نے جمعرات کو ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ کجریوال نے اپنے اسکول کے پرنسپلوں پر اعتماد ظاہر کیا انہیں بہترین تربیت اور سہولیات فراہم کیں۔ سرکاراسکول آج ملک کے ٹاپ 10اسکولوں میں شامل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ اروند کجریوال کی قیادت میں جب دہلی نے دکھایا ہے کہ سرکاری اسکولوں کو ٹاپ اسکولوں میں شامل کیا جاسکتا ہے تو ملک کی ہر ریاست بھی ایسا کرسکتی ہے۔
نائب وزیر اعلیٰ نے کہا کہ ہم پچھلے کچھ سالوں میں صفر سے 5 پر آگئے ہیں۔اب ہمارا خواب ہے کہ آنے والے وقت میں ملک کے ٹاپ 10اسکولوں کی فہرست میں سبھی نام دہلی کے سرکاری اسکولوں کے ہوں، جب دنیا کے ٹاپ اسکولوں کی فہرست بنے گی تو اس کے تمام اسکول بھارت سے ہونا چاہئے ۔واضح رہے کہ پریس کانفرنس کے دوران ایجوکیشن ورلڈ رینکنگ میں سرفہرست آنے والے کجریوال نے سرکار کے پانچ اسکولوں کے اسکولوں کے سربراہوں کو شامل کیا اور میڈیا کو بتایا کہ انہوں نے اپنے اسکولوں میں پڑھانے اور سیکھنے کے ایسے کون سے طریقے اپنائے ہیں۔ اسکولوں میں ایسا ماحول پیدا کیا کہ اس کے ملک کے ٹاپ 10 سرکاری اسکولوں ہیں۔
وزیر تعلیم نے کہا کہ دہلی میں گزشتہ 7سالوں میں وزیر اعلیٰ اروند کجریوال کی قیادت میں تعلیم میں بہت اچھا کام کیا گیا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ آج دہلی کے سرکاری اسکول ملک اور دنیا کے تعلیمی نظام میں اپنی جگہ بنا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اروند کجریوال کی رہنمائی میں دہلی سرکار کیااسکولوں کو شاندار بنایا گیا ہے، اساتذہ کو عالمی معیار کی تربیت دی گئی، ہمارے اساتذہ کو وہ عزت دی گئی جس کے وہ حقدار تھے۔ اساتذہ کے مسائل حل ہو گئے۔ یہ نتیجہ ہے اور مجھے یہ بتاتے ہوئے خوشی ہو رہی ہے کہ اس سال ایجوکیشن ورلڈ نے ٹاپ 10رینکنگ جاری کی ہے۔منیش سسودیا نے کہا کہ دہلی سرکارکے 5اسکول شامل ہیں۔
دہلی کے سرکاری اسکولوں کے تعلیمی عالمی درجہ بندی میں سرفہرست ہونے پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے منیش سسودیا نے کہا کہ یہ اروند کجریوال اور پوری تعلیمی ٹیم کے لیے فخر کی بات ہے۔ یہ صرف ہماری ہی کامیابی نہیں ہے، یہ کامیابی دہلی کے سرکاری اسکولوں کے تمام اسکولوں کے سربراہوں، ہمارے 60ہزاراساتذہ اور لاکھوں طلبہ اور والدین کا کارنامہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے ٹاپ 5اسکول دہلی کے مختلف حصوں میں سرکاری اسکول ہیں اور ان میں سے 2اسکول مشرقی دہلی کے ہیں، جن کی حالت پہلے بہت خراب تھی۔
وزیر تعلیم منیش سسودیا نے کہا کہ یہ اروند کجریوال جی کا وژن ہے کہ ہندوستان دنیا میں نمبر 1ملک بن جائے اور اس کا واحد راستہ یہ ہے کہ ہمارا ملک تعلیم کے میدان میں نمبر 1بن جائے۔ انہوں نے کہا کہ آج اگر گوگل پر دنیا کے اعلیٰ ترین اسکولوں یا تعلیمی اداروں کی فہرست دیکھی جائے تو اس میں ہندوستان کا ایک بھی ادارہ شامل نہیں ہے یہ حال ایک ایسے ملک کا ہے جہاں پوری دنیا میں ٹیلنٹ کا لوہا مانا جاتا تھا اور ہمیں وشو گرو کہا جاتا تھا۔ لیکن اب ایسا نہیں ہے کیونکہ آج ہمارا تعلیمی نظام دنیا کے کئی ممالک سے نیچے ہے اور اپنے تعلیمی نظام کو اوپر لائے بغیر ہم دوبارہ وشو گرو نہیں بن سکتے۔دنیا کا نمبر 1 ملک نہیں بن سکتا۔ ہم اپنے تعلیمی نظام کی بنیاد پر ہی وشو گرو بنیں گے۔ منیش سسودیا نے کہا کہ ہم نے پچھلے کچھ سالوں میں صفر سے 5تک کا سفر طے کیا ہے اور اب ہمارا خواب ہے کہ جب بھی ملک کے ٹاپ 10اسکولوں کی فہرست بنائی جائے تو سبھی کے نام دہلی کے سرکاری اسکولوں کے ہی ہوں گے۔ اور جب دنیا کے ٹاپ اسکولوں کی فہرست بنائی جائے تو اس میں جتنے بھی اسکول ہیں وہ ہندوستان سے ہونے چاہئیں۔
انہوں نے کہا کہ دہلی نے یہ دکھایا ہے کہ سرکاری اسکولوں کو ٹاپ اسکولوں میں شامل کیا جا سکتا ہے، پھر ملک کی ہر ریاست بھی ٹاپ کر سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آج دہلی کے سرکاری اسکول ملک کے اعلیٰ اسکولوں میں شامل ہیں کیونکہ ہم نے اپنے اسکول کے سربراہوں پر اعتماد ظاہر کیا ہے۔ انہیں اروند کیجریوال کی قیادت میں آئی آئی ایم میں قیادت کی تربیت دی گئی، اور کیمبرج یونیورسٹی میں بین الاقوامی سطح پر دی گئی۔ اور اس کے نتیجے میں دہلی کے سرکاری اسکول ٹاپ 10میں شامل ہیں۔