چین میں شدید گرمی، 6 دہائیوں کا ریکارڈ ٹوٹا

0

بیجنگ (یو این آئی) چین کے کچھ صوبے شدید گرمی اور لو کی زد میں ہیں اور چلچلاتی گرمی نے تقریباً 61 سال کا ریکارڈ توڑ دیا ہے ۔ قومی موسمیاتی انتظامیہ نے ایک بیان میں کہا کہ وسیع مطالعات سے پتہ چلتا ہے کہ ہمارے ملک میں اعلی درجہ حرارت اور غیر معمولی گرمی کے ساتھ یہ علاقائی رجحان جاری رہے گا اور اس کی شدت میں اضافہ ہوگا ۔ اس سال 15 اگست تک چین میں 64 دن کی غیر معمولی گرمی ریکارڈ کی گئی ہے جبکہ پچھلا ریکارڈ 2013 میں 62 دن کا تھا۔ ماہرین موسمیات نے 1,680 موسمی اسٹیشنوں سے ڈیٹا اکٹھا کیا جنہوں نے 35 ڈگری سیلسیس (95 ڈگری سیلسیس) سے زیادہ درجہ حرارت ریکارڈ کیا اور 1,426 اسٹیشنوں نے 37 ڈگری سیلسیس سے زیادہ درجہ حرارت ریکارڈ کیا۔ کل ملاکر 262 اسٹیشنوں پر 40 ڈگری سیلسیس سے زیادہ درجہ حرارت ریکارڈ کیا گیا جو کہ ایک ریکارڈ بھی ہے کیونکہ 2013 میں صرف 187 اسٹیشنوں نے ایسا درجہ حرارت ریکارڈ کیا تھا۔ چین کے شمال مغربی صوبہ ہوبی کی زوشان کاؤنٹی کے ایک ویدر اسٹیشن میں درجہ حرارت 44.6 ڈگری سیلسیس ریکارڈ کیا گیا۔ چونگ کنگ کی جنوب مشرقی میونسپلٹی میں 44.5 ڈگری سیلسیس، شمالی صوبہ ہیبی میں لنگشا کاؤنٹی میں 44.2 ڈگری سیلسیس اور جنوب مغربی صوبہ یونان میں 44 ڈگری سیلسیس ریکارڈ کیا گیا۔ یکم جون سے 15 اگست تک کی مدت میں زیادہ درجہ حرارت والے دنوں کی قومی اوسط تعداد 12 تھی، جو کہ اسی مدت میں غیر معمولی طور پر گرم موسم کے بغیر سالوں میں اسی مدت میں درج کئے گئے کے مقابلہ میں 5.1 دن زیادہ ہے ۔ ملک کے بعض علاقوں میں آئندہ سات سے دس روز تک شدید گرمی پڑنے کا اندازہ ہے ۔