موہالی اور گروگرام میں زمینیں فروخت نہ کرپائے ایم جی ایف :اعمار

معروف ریئل اسٹیٹ کمپنی اعمارانڈیا نے پنجاب اور ہریانہ سرکار سے کی اپیل

0

نئی دہلی(ایس این بی) رےئل اسٹےٹ کی معروف کمپنی اعمار انڈےا نے گروگرام (گڑگاﺅں) واقع 63.4 اےکڑ زمےن اور پنجاب کے موہالی (اےس اے اےس نگر) واقع 603 اےکڑ زمےن کو لے کر بالترتےب ہریانہ سرکار اور گروگرام ضلع انتظامےہ ، پنجاب سرکار اورموہالی ضلع انتظامےہ سے رابطہ کر کے اپےل کی ہے کہ اےم جی اےف ڈےولپمنٹس، اس کے ساتھےوں اور اس سے ملحق کمپنےوں اور ان کے پرموٹروں و ڈائرےکٹروں کو ان زمےنوں کی خرےد وفروخت سے روکا جائے۔ ان زمےنوں کو لے کر دونوں جگہ اپنی اپےل مےں اعمار انڈےا نے آئی سی سی آر بی ٹریشن ٹرےبونل کے اس فےصلے کا حوالہ دےاہے، جس مےں ٹرےبونل نے کہاتھا کہ اس کا فےصلہ آنے تک ان زمےنوں کو منتقل نہ کےاجائے۔
غور طلب ہے کہ اعماراور ایم جی ایف کے بیچ گہرا تنازع چل رہا ہے۔ اعمار نے ایم جی ایف کے سربراہ شرون گپتا اور دیگر کے خلاف کئی مجرمانہ مقدمے درج کرارکھے ہیں۔ٹرےبونل نے ےہ فےصلہ اعمار انڈےا لمےٹڈ (سابقہ اعمار-اےم جی اےف لےنڈ لمےٹڈ) اور اےم جی اےف ڈےولپمنٹس،شرون گپتان و دےگر کے بےچ جاری تنازع کی ثالثی کے دوران دےا تھا۔ موہالی کی 603 اےکڑزمےن کو لے کر اعمار انڈےا نے وہاں کے تحصےل داراور سب رجسٹرار کو مکتوب بھےجا ہے۔اس مےں کمپنی نے کہا ہے کہ ثالثی کی کارروائی ابھی جاری ہے۔ پنچاٹ کا فےصلہ آتے ہی اسے مطلع کےا جائے گا۔ وہےں گروگرام کی 63.4 اےکڑزمےن (قادی پور مےں 43.284، مانےسر مےں 5.07 اور وزےرآباد مےں 15.08 اےکڑ زمےن) کے معاملے مےں بھی ضلع کے ڈپٹی کمشنر اور سب رجسٹرار کو لکھے مکتوب مےں اعمار انڈےا نے کہا ہے کہ ثالثی کی کارروائی ابھی جاری ہے اور فےصلہ آتے ہی ڈپٹی کمشنر کے نوٹس مےں ےہ لادےاجائے گا۔ اعمار اےم جی اےف لےنڈ لمےٹڈ (اب اعمار انڈےا لمےٹڈ) دبئی واقع اعمار پراپرٹےز پی جے اےس سی اور شرون گپتا کی ملکےت والی اےم جی اےف ڈےولپمنٹس کے درمےان جوائنٹ ےونٹ تھا۔ دنےا کی بڑی رےئل اسٹےٹ کمپنےوں مےں سے اےک اعمار پراپرٹےز نے شرون گپتا کی ملکےت والے اےم جی اےف گروپ کے ساتھ جوائنٹ ونچر 2005 مےں شروع کےاتھا۔ اعمار نے 7 ہزار کروڑ روپے کی سرماےہ کاری سے ہندوستان کے مارکےٹ مےں انٹری کی تھی۔ قانون کے مطابق 2016 مےں دونوں پارٹنرس الگ ہوگئے تھے۔کمپنی کے تحلیل ہونے کے بعد اعمار نے اےم جی اےف لےنڈ لمےٹڈ پر پورا کنٹرول لے لےاتھا ۔ اس کے بعد ہندوستان کی اس کی ےونٹ کا نام 7 اکتوبر 2020 سے اعمار انڈےا لمےٹڈ کردےاگےا۔ اعمار نے شرون گپتا ، ان کی اہلےہ اور ان کی کمپنی اےم جی اےف کے خلاف مبےنہ جعلسازی اور دھوکہ دہی کا کےس درج کراےا ہے۔ اعمار نے اپنے کاروبار اور شبےہ کو ہوئے نقصان کے عوض مےں اےم جی اےف سے 18 فےصد سود سمےت 2400 کروڑ کاہرجانہ مانگا ہے۔

 

Emaar India has approached the District Administration at Mohali (SAS Nagar), Punjab with a request to restrain MGF Developments Limited and its associates and affiliates and its promoters and directors from creating any third-party rights, title and/or interest on land parcels in total admeasuring 603.35 Acres approx. in Mohali (SAS Nagar), Haryana.  Emaar India has referred to an order passed by an ICC Arbitral Tribunal, directing that ‘no transaction of any kind be undertaken in respect of the land parcels mentioned...until the passing of an arbitral award

This order was pronounced during the arbitration proceedings between Emaar India Limited (formerly Emaar MGF Land Limited), MGF Developments Limited, Shravan Gupta and Others

Emaar India, in its letters addressed to the Sub-Registrar of and Tehsildar of Mohali (SAS Nagar), has informed that arbitration proceeding are going and that further outcome of the said arbitration proceeding will be duly informed to and brought to their offices

Emaar MGF Land Limited (now Emaar India Limited) was a joint venture between Dubai-based Emaar Properties PJSC and Shravan Gupta owned MGF Developments Limited.  Emaar Properties, one of the world’s leading real estate developers, entered the Indian real estate market by investing about Rs. 7000 Crores in a joint venture with Shravan Gupta owned and controlled MGF Group in the year 2005.  The two partners parted way in 2016 through a demerger process by way of court of law

After the demerger, Emaar took complete control of the operations of Emaar MGF Land Limited (now Emaar India Limited).  Subsequently, the name of the Indian entity has been changed to Emaar India Limited with effect of 07.10.2020

Similarly, during November 2020, Emaar India had approached the District Administration at Gurugram (Gurgaon), Haryana with a request to restrain MGF Developments, associates, affiliates, its promoters and directors from creating any third-party rights, title and/or interest on land parcels in total admeasuring 63.4 Acres approx. in Gurugram (Gurgaon), Haryana

Emaar has also filed a case alleging fraud and cheating against Shravan Gupta, his wife, his company MGF Developments Limited and other associates for fraudulent and illegal acts.  It has sought a compensation of Rs. 2400 Crores with interest @ 18% from the date of respective losses in order to recover massive losses including irreparable reputational losses due to ‘the fraudulent and illegal acts of MGF Developments’

آپ کے تاثرات
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here