دہلی میں حج2022کے لیے درخواست فارم جمع کرنے کا آغاز

0

نئی دہلی،(یو این آئی):دہلی میں حج2022کے لیے درخواست فارم جمع کرنے کا باضابطہ آغازہوگیا ہے۔یہ بات دہلی اسٹیٹ حج کمیٹی کے چیئرمین مختار احمد نے یہاں ایک حج سے متعلق یہاں منعقدہ ایک میٹنگ میں کہی۔یہ اطلاع آج یہاں جاری کردہ ایک پریس ریلیز میں دی گئی ہے۔
انہوں نے کہا کہ اللہ کا بہت بڑا کرم ہے کہ 2سال کے لمبے انتظار کے بعد حج2022؁ء میں ہندوستانی حاجیوں کے شامل ہونے کی پوری امید ہے اور دہلی اسٹیٹ حج کمیٹی کا چیئرمین ہونے کے ناطے مجھے حج2022؁ء کے لیے حج فارم بھرنے کا اعلان کرتے ہوئے بہت خوشی ہو رہی ہے۔
انہوں نے کہا کہ دہلی اسٹیٹ حج کمیٹی نہ صرف دہلی بلکہ دہلی سے فلائٹ لینے والے شمالی ہندوستان کی ریاستوں سے آنے والے تمام عازمین حج کی خدمت کے لیے حاضر ہے۔ ساتھ ہی یہ بھی بتایاکہ دہلی اسٹیٹ حج کمیٹی کے دفترمیں آنے والے سبھی حج کی درخواست دینے والوں کی ہر ممکن مدد کی جائے گی۔ ان کے آن لائن فارم بھرنے، آن لائن بینک میں پیسہ جمع کرانے یا حج سے متعلق دیگر ضروریات ہوں یا بلڈگروپ چیکنگ ہویہ سبھی سہولیات ایک ہی چھت کے نیچے مہیا کرائی جائینگی۔جس سے عازمین حج کو کسی بھی کام کے لیے ادھرادھر بھٹکنا نہیں پڑیگا۔ اس کے علاوہ جیسی ضرورت محسوس ہوگی ہم عازمین حج کی سہولیات کے لیے مزید انتظامات کریں گی۔
مختار احمد نے مزید بتایا کہ حج فارم جمع کرنے کا کام یکم نومبر2021؁ء سے شروع ہوکر 31/جنوری2022؁ئتک چلے گا۔ انہوں نے کہا کہ حج کمیٹی آف انڈیا کے ذریعہ جاری قواعد و ضوابط کے مطابق حج پر جانے کے خواہشمند آن لائن درخواست دے سکتے ہیں۔ جن لوگوں کو آن لائن فارم جمع کرنے میں کوئی دقت آرہی ہے تو وہ دہلی اسٹیٹ حج کمیٹی سے کام کے دنوں میں صبح10بجے سے شام4بجے تک فون نمبر011-23230507پر رابطہ کر سکتے ہیں۔
اس موقع پر دہلی اسٹیٹ حج کمیٹی کے چیئرمین مختار احمدکے علاوہ،ممبران عبدالرحمن (ایم ایل اے)، حاجی یونس(ایم ایل اے)، عبدالواجد خان (کونسلر)، ڈاکٹر سید شاداب حسین رضوی اشرفی،دہلی عرس کمیٹی کے چیئرمین ایف۔آئی۔ اسمائیلی،گروپ آف حج اینڈ سوشل ورک آرگنائزیشن کے صدر حاجی ادریس، حاجی ریاض راجو، حاجی اسعد میاں،حاجی ریاض الدین، حجن مہر النساء، حاجی شکیل، حاجی ظہیرالدین، محمد زاہد، اسد عالم، حاجی فرید جمیل اور حج سے متعلق رضاکار تنظیموں کے علاوہ دہلی اسٹیٹ حج کمیٹی کے ڈپٹی ایگزیکٹو آفیسرمحسن علی و سبھی افسران و ملازمین و عازمین حج موجود تھے۔

آپ کے تاثرات
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here