نئی دہلی: ایوان بالا راجیہ سبھا میں اپوزیشن پارٹیاں کانگریس اور دیگر جماعتوں نے پٹرول اور ڈیزل کی بڑھتی قیمتوں پر آج ایوان بالا راجیہ سبھا میں زبردست ہنگامہ کیا ، جس کی وجہ سے ایوان کی کارروائی دن میں چاربار ملتوی کرنے کے بعد دن بھر کے لئے ملتوی کردی گئی۔
پیر کی صبح جیسے ہی ایوان کی کارروائی کا آغاز ہوا ، چیئرمین ایم ونکیا نائیڈو نے تین نئے ممبروں کو حلف دلایا اور ایوان نے رخصت پذیرممبران کو خراج تحسین پیش کیا۔ وقفہ صفر کے دوران خواتین کے عالمی دن کے موقع پر خواتین ممبران نے اپنے خیالات کا اظہار کیا۔ اس کے بعد جب مسٹر نائیڈو نے وقفہ سوالات شروع کرنے کے لئے ممبران کا نام لیا تو ایوان میں قائد حزب اختلاف ملیکارجن کھڑگے نے کہا کہ پٹرول اور ڈیزل کی قیمتیں آسمان چھو رہی ہیں اور انہوں نے اس جلتے مسئلے پر بحث کرانے کے لئے ضابطہ 267 کے تحت تحریک التوا کا نوٹس دیا ۔
چیئرمین نے کہا کہ انہوں نے اس نوٹس کو قبول نہیں کیا ہے،اراکین تخصیصی بل پر تبادلہ خیال کرسکتے ہیں اور دوسرے مواقع پر اس مسئلے پر بات کرسکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بجٹ اجلاس کے دوسرے مرحلے کی کارروائی کا آج پہلا دن ہے ، لہذا انہوں نے ممبران کو پرسکون رہنے اور کارروائی کو آسانی سے چلنے دینے کی اپیل کی ۔ یہ سن کر کانگریس اور دیگر اپوزیشن پارٹیوں کے ممبروں نے بحث کا مطالبہ کرتے ہوئے ہنگامہ شروع کردیا۔
ایوان میں ہنگامہ اور شور و غوغا دیکھ کر مسٹر نائیڈو نے ایوان کی کارروائی گیارہ بجے تک ملتوی کردی۔
اس کے بعد ، جب ڈپٹی چیئرمین ہری ونش کو گیارہ بجے ایوان کی کارروائی دوبارہ شروع کرنی چاہی تو ، کانگریس کے اراکین نے اپنے مطالبے کا اعادہ کیا ، جس پر مسٹر ہری ونش نے کہا کہ چیئرمین اس معاملے پر رولنگ دے چکے ہیں اور اس پر دوبارہ غور نہیں کیا جاسکتا۔ مسٹر کھڑگے نے کہا کہ یہ ایک بہت اہم مسئلہ ہے اور اس پربحث سے گریز نہیں کیا جاسکتا۔ اپوزیشن ارکان نے ایک بار پھر شور مچانا شروع کردیا ، جس کی وجہ سے ڈپٹی چیئرمین نے ایوان کی کارروائی ایک بجے تک کیلئے ملتوی کردی۔
ایک بجے بھی ایوان میں سکون قائم نہ ہونے پر راجیہ سبھا کی کارروائی پہلے سوا بجے اور پھر دوپہر ڈیڑھ بجے تک کیلئے کارروائی ملتوی کرنا پڑی ۔
اس کے بعد ، پریزائڈنگ ڈپٹی چیئر وندنا چوہان نے ایوان کی کارروائی شروع ہونے پر کہا کہ ان کے پاس ممبروں کے لئے اچھی خبر ہے۔ انہوں نے کہا کہ متعدد ممبران نے چیئرمین سے درخواست کی تھی کہ اس کارروائی کے اوقات کو تبدیل کیا جانا چاہئے اور اس بات کو دھیان میں رکھتے ہوئے اب ایوان کی کارروائی صبح گیارہ بجے سے شام چھ بجے تک چلے گی۔ انہوں نے کہا کہ ممبروں کے بیٹھنے کا انتظام بھی پہلے کی طرح کیا گیا ہے۔ اب ممبران پہلے کی طرح ایوان میں اپنی نشستوں پر بیٹھیں گے ، حالانکہ کچھ ممبر ابھی بھی راجیہ سبھا گیلری میں بیٹھیں گے۔
اس کے بعد انہوں نے منگل تک کیلئے ایوان کی کارروائی ملتوی کردی۔ اس طرح بجٹ اجلاس کے دوسرے مرحلے کے پہلے دن ایوان میں کوئی خاص قانون سازی کا کام نہیں ہوا۔
بجٹ اجلاس کا پہلا مرحلہ 29 جنوری سے 12 فروری تک ہوا۔ دوسرا مرحلہ 8 مارچ سے 8 اپریل تک جاری رہے گا۔

آپ کے تاثرات
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here