Image:timesnownews.com

کیرالہ کے لوگوں کو دھوکہ دیا گیا :مودی
دھرماپورم (یواین آئی): وزیراعظم نریندرمودی نے کہا ہے کہ چھوٹی،بہت چھوٹی اور درمیانی صنعتوں کا شعبہ (ایم ایس ایم ای) شروع سے ہی قومی جمہوری اتھاد (این ڈی اے ) کیلئے اہم رہا ہے اور یہ شعبہ ہندوستانی معیشت کی ریڑھ ہے ۔مسٹر مودی نے منگل کو یہاں ایک انتخابی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پچھلے سال کورونا کی وبا کے دوران یہ شعبہ کافی پچھڑ گیا تھا اور اس وقت ان کی حکومت اس کے اضافہ اور ترقی کیلئے پرعزم ہے اور وہ خود بھی اس میں دلچسپی لے رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ یہ شعبہ حکومت کیلئے کافی اہم رہا ہے اور ان کی حکومت نے ایم ایس ایم ای کیلئے شرطوں میں تبدیلی کردی ہے اور اس سے کافی لوگوں کیلئے کاروبار کرنا آسان ہوگیا ہے ۔ مرکزی حکومت نے ریاست میں 3.6 لاکھ ایم ایس ایم ای کی ترقی کیلئے 14000 کروڑ روپے کی منظوری دی ہے اور سود کی شرح میں تبدیلی سے اس شعبہ سے جڑے ڈیڑھ لاکھ لوگوں کو فائدہ ملا ہے ۔
انہوں نے تھروکورال کا ذکر کرتے ہوئے کہاکہ وہ ہمیشہ کسانوں کا احترام کرتے تھے اور ان لوگوں کی حمایت کرتے تھے، جن کے پاس اپنی زمین جوتنے کیلئے نہیں تھی۔ این ڈی اے حکومت کی ترجیح ہمیشہ ہی چھوٹے کسانوں کی ترقی کرنا رہی ہے اور اس کے پیش نظر کئی اصلاحی پروگرام شروع کئے گئے ہیں جو کسانوں کو بچولیوں سے آزاد کرنے کی سمت میں کارگر ثابت ہوں گے۔ مسٹر مودی نے کہا کہ تمل ناڈو کا دفاعی گلیارا ریاست کے لوگوں کیلئے متعدد فائدے لے کر آئے گا اور ایک ماہ پہلے جس اہم جنگی ٹینک کا انہوں نے افتتاح کیا تھا، وہ ملک کی جنوبی سرحدوں کی حفاظت کرے گا۔مسٹر مودی نے اپنی تقریر کا اختتام کرتے ہوئے کہاکہ ہم آپ کے بچوں کے مستقبل کی گارنٹی دیتے ہیں اور اتنی بھاری تعداد میں یہاں آکر آپ نے جو ہمت دکھائی ہے وہ ہمارے لئے آشیرواد کی طرح کام کرے گا۔
دریں اثنا وزیر اعظم نریندر مودی نے کیرالہ کی مارکسی کمیونسٹ پارٹی (سی پی آئی-ایم) کی زیرقیادت لیفٹ ڈیموکریٹک فرنٹ(ایل ڈی ایف) کی حکومت پر ’سونے کے کچھ ٹکڑوں‘ کیلئے ریاست کے لوگوں کو دھوکہ دینے کا الزام عائد کیا۔مسٹر مودی نے یہاں اپنی پہلی انتخابی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ا یل ڈی ایف کے بارے میں کہا جاسکتا ہے کہ جیسے دھو کا بازوں نے عیسیٰ مسیح کو دھوکہ د یا تھا ، ویسے ہی ایل ڈی ایف نے سونے کے چند ٹکڑوں کیلئے کیرالہ کے لوگوں کو دھوکہ دیا ہے۔ مسٹر مودی کا یہ تبصرہ واضح طور پر 2020کے کیرالہ کے سونے کی اسمگلنگ کے کیس کے تناظر میں تھا۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ کچھ برسوں میں کیرالہ کی سیاست میں بڑی تبدیلی دیکھی جارہی ہے۔ وزیر اعظم نے کہا کہ پہلی بار ووٹ ڈالنے والے نوجوان ایل ڈی ایف اور اپوزیشن یونائیٹڈ ڈیموکریٹک فرنٹ (یو ڈی ایف) دونوں سے ناراض ہیں۔
انہوں نے کہا کہ گزشتہ کئی برسوں سے یو ڈی ایف اور ایل ڈی ایف کی دوستانہ رضامندی کی سیاست جاری ہے۔ انہوں نے کہا کہ مختلف نام ایک جیسے ہی کام کر رہے ہیں۔ ان کا مقصد دولت کمانا ہے۔ ریاست کی 140رکنی اسمبلی کے انتخابات کیلئے 6اپریل کو ووٹ ڈالے جائیں گے ۔ ووٹوں کی گنتی 2مئی کو ہوگی۔

آپ کے تاثرات
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here