پاک مقبوضہ کشمیر کی واپسی کیلئے ہندوستان پرعزم، منظورشدہ قرارداد ہوگی نافذ

0

سردار ولبھ بھائی پٹیل کا خواب اسی دن پورا ہوگا جب 1947کے تمام مہاجروں کو ان کی زمین اور گھر واپس ملیں گے:راجناتھ
سری نگر، (یو این آئی) :مرکزی وزیر دفاع راجناتھ سنگھ نے پاکستان کو ہدف تنقید بناتے ہوئے کہا کہ بھارت، پاکستان کے زیر قبضہ کشمیر کو واپس لانے کے متعلق پارلیمنٹ میں منظور کی گئی 1994کی قرار داد کو نافذ کرنے کےلئے پر عزم ہے۔ انہوں نے کہاکہ ’ہندوستان، پاکستان زیر قبضہ کشمیر کے ہر شہری کے درد کو محسوس کرتا ہے، جہاں لوگوں کو تشدد کا نشانہ بنانا اور ہراساں کرنا معمول بن گیا ہے‘۔ واضح رہے کہ پارلیمنٹ میں 22فروری 1994کو ایک قرار داد پاس کی گئی، جس میں پاکستان سے مطالبہ کیا گیا کہ وہ اس کے قبضے والے کشمیر کے حصے کو خالی کرے۔ موصوف وزیر دفاع نے ان باتوں کا اظہار جمعرات کو یہاں بڈگام میں 76ویں انفنٹری دن کے موقع پر فوج کے زیر اہتمام ’شوریہ دیوس‘ سے خطاب کے دوران کیا۔اس موقع پر جموں وکشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا بھی موجود تھے ۔انہوں نے کہاکہ ’ہندوستان، پاکستان زیر قبضہ کشمیر کے لوگوں کے درد کو محسوس کر رہا ہے، جہاں لوگوں کو تشدد کا نشانہ بنانا اور ہراساں کرنا معمول بن گیا ہے‘۔ ان کا کہنا تھاکہ پاکستانی حکومت پاکستان زیر قبضہ کشمیر میں نفرت کے بیچ بو رہی ہے اور وہ وقت دور نہیں ہے، جب وہاں لوگ بڑے پیمانے پر آواز بلند کریں گے۔مسٹر سنگھ نے کہا کہ ہندوستان پاکستان زیر قبضہ کشمیر بشمول گلگت اور بلتستان کو واپس لینے کے متعلق پارلیمنٹ میں منظور کی گئی 1994کی قرار داد کو نافذ کرنے کےلئے پر عزم ہے۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان زیر قبضہ کشمیر کے لوگوں کو تمام تر بنیادی حقوق سے محروم رکھا جا رہا ہے، جس سے ہم اچھی طرح باخبر ہیں۔ان کا کہنا تھاکہ سردار ولبھ بھائی پٹیل کا خواب اس دن پورا ہوگا جب سال1947کے تمام مہاجروں کو اپنی زمین اور اپنے گھر واپس ملیں گے۔انہوں نے کہاکہ اور میں آپ کو یقین دلانا چاہتا ہوں کہ وہ دن ضرور آئے گا۔وزیر دفاع نے کہا کہ دفعہ 370کی تنسیخ کے بعد جموں وکشمیر تعمیر و ترقی اور کامیابی کی راہ پر گامزن ہے۔ انہوں نے کہاکہ ’قبل ازیں کشمیر کا سماج ٹکڑوں میں بٹا ہوا تھا، لیکن مذکورہ دفعہ کے خاتمے کے بعد سے یہاں تمام طبقوں کے لوگ ایک ساتھ تعمیر و ترقی اور کامیابی کی راہ پر گامزن ہیں اور یہ ابھی شروعات ہی ہے‘۔ راجناتھ سنگھ نے کہا کہ دفعہ 370کی تنسیخ سے جموں وکشمیر میں نئی شروعات ہوئی۔انہوں نے کہاکہ ’جموں وکشمیر کے لوگوں نے جموں وکشمیر کے ہند یونین میں مکمل طور پر ضم ہونے کی حمایت کی‘۔ان کا کہنا تھا کہ آج جموں و کشمیر اور لداخ یونین ٹریٹریز ترقی کر رہی ہیں اور تمام طبقے کے لوگو ں کو ان کے حقوق مل رہے ہیں۔وزیر دفاع نے کہا کہ 1947 میں ہندوستانی فوج نے دشمنوں کا بھر پور اور مو¿ثر جواب دیا، جنہوں نے کشمیر پر غیر قانونی طور پر قبضہ کرنے کی کوشش کی تھی۔انہوں نے کہاکہ ’میں ان انفنٹری ریجمنٹس کو خراج پیش کرتا ہوں، جنہوں نے بیش بہا قربانیاں پیش کرکے حملہ آوروں کو واپس دھکیلا‘۔ان کا کہنا تھاکہ ’انفنٹری دن ہمیں دشمنوں کو جڑ سے اکھاڑنے اور ملک کی سالمیت کو محفوظ رکھنے کے عہد کو تازہ کرنے کی یاد دلاتا ہے‘۔ انہوں نے ملک کی سرحدوں اور ملک کو تحفظ فراہم کرنے کے لئے فوجی جوانوں کے رول کی سراہنا کی۔