ایف آئی اے کا شہباز اور حمزہ کی گرفتاری کا مطالبہ

0

اسلام آباد (یو این آئی) : پاکستان کی وفاقی تحقیقاتی ایجنسی (ایف آئی اے ) نے ہفتہ کو وزیر اعظم شہباز شریف، ان کے صاحبزادے اور پنجاب کے وزیر اعلیٰ حمزہ شہباز کی 16 ارب روپے کی منی لانڈرنگ کیس میں گرفتاری کا مطالبہ کیا۔جیو نیوز نے رپورٹ کیا کہ ایف آئی اے نے خصوصی عدالت (سنٹرلI-)کو بتایا ہے کہ ایجنسی باپ بیٹے کو 16 ارب روپے کی منی لانڈرنگ کیس کے سلسلے میں گرفتار کرنا چاہتی ہے ۔ہفتہ کو عدالت میں سماعت کے دوران ایجنسی کے وکیل نے کہا کہ وہ ’تفتیش کا حصہ نہیں ہیں۔‘تاہم حمزہ کے وکیل نے ان دعوؤں کی تردید کی اور ایف آئی اے پر عدالت کو گمراہ کرنے کا الزام لگایا۔
پاکستان مسلم لیگ (ن) کے دونوں رہنماؤں کے وکیل نے جرح کے دوران کہا کہ ایف آئی اے گزشتہ ڈیڑھ سال سے تحقیقات کر رہی ہے اور وہ ان کے خلاف کوئی ثبوت عدالت میں پیش نہیں کر سکی۔وکیل نے عدالت کو بتایا کہ جیل میں رہتے ہوئے ایف آئی اے نے ان سے پوچھ گچھ کی۔جیو نیوز نے رپورٹ کیا کہ دسمبر 2021 میں ایجنسی نے مسٹر شہباز اور مسٹر حمزہ کے خلاف چینی اسکینڈل کے ایک کیس میں 16 ارب روپے کے غلط استعمال میں مبینہ طور پر ملوث ہونے پر عدالت میں ‘چالان دائر کیے تھے۔ایف آئی اے کی رپورٹ کے مطابق ٹیم نے شہباز خاندان کے 28 بے نامی اکاؤنٹس کا سراغ لگایا ہے جن کے ذریعے 2008 سے 2018 کے درمیان 16.3 ارب روپے کی منی لانڈرنگ کی گئی۔ ایف آئی اے نے 17 ہزار کریڈٹ ٹرانزیکشنز کی منی ٹریل کی چھان بین کی ہے ۔قابل ذکر ہے کہ گزشتہ سماعت کے دوران عدالت نے وزیراعظم شہباز شریف اور ان کے صاحبزادے حمزہ شہباز کی عبوری ضمانت میں 4 جون تک توسیع کی تھی۔