دہلی پولیس نے کمیشن کے نوٹس کے بعد اسکول افسران کے خلاف کارروائی شروع کی :سواتی مالیوال

0

نئی دہلی(ایس این بی) : دہلی خاتون کمیشن نے تینوں میونسپل کارپوریشن کو سمن جاری کرکے اسکولوں کی جانب سے طالبات کی حفاظت کے لیے اٹھائے گئے اقدامات کے بارے میں معلومات طلب کی ہیں۔ڈی ڈبلیو سی کی چیئرپرسن سواتی مالیوال نے منگل کو کہا، ’ایک اسکول بچے کے لیے دوسرا گھر ہوتا ہے۔ بچوں کو اپنے اسکولوں میں سب سے زیادہ محفوظ محسوس کرنا چاہیے جن کا کام انہیں جامع تعلیم فراہم کرنا ہے۔ تاہم میونسپل اسکول میں لڑکیوں کے ساتھ جنسی زیادتی کے ایک حالیہ واقعے نے ان اسکولوں کے اندر بچوں بالخصوص لڑکیوں کی حفاظت پر سنگین سوالات کھڑے کردیے ہیں۔ مزید برآں، مشرقی دہلی میونسپل کارپوریشن کی طرف سے فراہم کردہ معلومات طلباء کے تحفظ کی مایوس کن حالت کو ظاہر کرتی ہے کیونکہ کسی بھی اسکول میں سیکورٹی گارڈ نہیں ہیں۔ یہ ہر گز قابل قبول نہیں ہے اور کمیشن نے اس سلسلے میں انکوائری شروع کر دی ہے۔ ان اسکولوں کو بچوں کے لیے محفوظ بنانے کے لیے فوری اقدامات کیے جائیں۔خاتون کمیشن نے یہ قدم مشرقی دہلی میونسپل کارپوریشن کے زیر انتظام اسکول میں طالبات کو جنسی طور پر ہراساں کرنے کے ایک واقعہ کے پس منظر میں اٹھایا ہے۔کمیشن کو دہلی کے بھجن پورہ علاقے میں میونسپل کارپوریشن کے زیر انتظام ایک پرائمری اسکول کے اندر طالبات کو جنسی طور پر ہراساں کرنے کی شکایت موصول ہوئی تھی۔ چھایا اسکول کی میٹنگ کے بعد کلاس روم کے اندر اپنی ٹیچر کا انتظار کر رہی تھی جب ایک نامعلوم شخص کلاس روم میں داخل ہوا اور کچھ طالبات کے ساتھ جنسی زیادتی کی۔ اس سلسلے میں کمیشن نے مشرقی دہلی میونسپل کارپوریشن کے کمشنر کو سمن جاری کیا تھا۔کارپوریشن کے افسران کمیشن کے سامنے پیش ہوئے اور بتایا کہ ان کے کسی بھی اسکول میں دن کے وقت سیکورٹی گارڈ نہیں ہیں۔ انہوں نے کمیشن کو یہ بھی بتایا کہ 232 اسکولوں میں سے صرف 15 اسکولوں میں سی سی ٹی وی کیمرے ہیں، وہ بھی باؤنڈری وال پر اور کلاس رومز کے باہر۔ انہوں نے بتایا کہ مشرقی دہلی میونسپل کارپوریشن کے تمام اسکولوں کی چاردیواری پر سی سی ٹی وی کیمرے لگانے کی تجویز آخری مرحلے میں ہے۔کمیشن نے دن کے اوقات میں اسکولوں میں سیکیورٹی گارڈوں کی عدم موجودگی اور اسکولوں میں سی سی ٹی وی کیمروں کی کمی کا سخت نوٹس لیا ہے۔ سواتی مالیوال نے کہا کہ اسکولوں بشمول کلاس روموںمیں سیکورٹی گارڈوں اور سی سی ٹی وی کی کمی بالکل ناقابل قبول ہے کیونکہ اس کا اسکولوں میں بچوں اور اساتذہ کی حفاظت پر براہ راست اثر پڑتا ہے۔دہلی کے خواتین کمیشن نے بھجن پورہ، دہلی کے ایم سی ڈی اسکول میں لڑکیوں کو جنسی طور پر ہراساں کرنے کے معاملے میں دہلی پولیس کو نوٹس جاری کیا تھا اور اسکول کے حکام کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا تھا۔ دہلی پولیس کی طرف سے جمع کرائے گئے جواب میں کمیشن کو بتایا گیا ہے کہ پولیس کو معاملے کی اطلاع نہ دینے پر اسکول حکام کے خلاف کارروائی شروع کر دی گئی ہے۔مشرقی دہلی میونسپل کارپوریشن کی طرف سے دی گئی معلومات کا نوٹس لیتے ہوئے کمیشن نے تینوں کارپوریشنوں کے کمشنروں کو سمن جاری کیا ہے اور طلبا کی سیکورٹی صورتحال کے بارے میں جانکاری مانگی ہے۔ کمیشن نے ہر کارپوریشن کے زیر انتظام اسکولوں کی مکمل تفصیلات طلب کی ہیں۔ کمیشن نے دن کے وقت اسکول میں موجود سیکیورٹی گارڈز اور تمام اسکولوں میں سیکیورٹی گارڈز کی جلد تقرری کے لیے کیے گئے اقدامات کے بارے میں معلومات طلب کی ہیں۔کمیشن نے اسکولوں میں نصب سی سی ٹی وی کیمروں کی حالت، کلاس رومز کے اندر کیمروں کی تنصیب کی ٹائم لائن اور اسکولوں کی باؤنڈری وال کے بارے میں بھی معلومات طلب کی ہیں۔