اتر پردیش، اتراکھنڈ، پنجاب، گوا اور منی پور میں اسمبلی انتخابات کے ووٹوں کی گنتی شروع

0
ANI

نئی دہلی: (یو این آئی) پانچ ریاستوں اتر پردیش، اتراکھنڈ، پنجاب، منی پور اور گوا میں اسمبلی انتخابات کے لئے ووٹوں کی گنتی جمعرات کی صبح 8 بجے سخت سیکورٹی کے درمیان شروع ہوئی۔ تمام پولنگ اسٹیشنوں پر سیکورٹی کے سخت انتظامات کرنے کے علاوہ وہاں سی سی ٹی وی کی نگرانی بھی کی جا رہی ہے۔ اتر پردیش میں سات مرحلوں میں، منی پور میں دو مرحلوں اور اتراکھنڈ، گوا اور پنجاب میں ایک ایک مرحلے میں ووٹنگ ہوئی۔ اتر پردیش اسمبلی کی 403 نشستوں کے لیے ووٹوں کی گنتی صبح 8 بجے سخت حفاظتی انتظامات کے درمیان شروع ہوئی۔ ریاست کے مختلف اضلاع میں کل 70 ہزار پولیس اہلکار اور 245 کمپنی نیم فوجی دستے اور 69 کمپنی پی اے سی کے اہلکار تعینات کیے گئے ہیں۔ گنتی کے حساس مقامات پر ویڈیو گرافی کی جارہی ہے اور پروگرام میں خلل ڈالنے والوں سے سختی سے نمٹنے کے احکامات جاری کردیئے گئے ہیں۔ اتراکھنڈ اسمبلی کی 70 سیٹوں کے لیے ووٹوں کی گنتی بھی صبح 8 بجے سے شروع ہو گئی۔ ریاست کی پانچویں اسمبلی کی تشکیل کے لیے 14 فروری کو ووٹنگ ہوئی، ریاست میں الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں (ای وی ایم) میں بند کل 632 امیدواروں کی قسمت کھلنے لگی ہے۔ اس بار ریاست کے کل 81 لاکھ 72 ہزار 173 ووٹروں میں سے صرف 65.37 فیصد ووٹروں نے اپنے حق رائے دہی کا استعمال کیا۔
ریاست کے 632 امیدواروں میں سے صرف 70 خوش نصیب امیدواروں کے نتائج تقریباً تین گھنٹے بعد سامنے آئیں گے۔ ان میں سبکدوش ہونے والے وزیر اعلیٰ اور بھارتیہ جنتا
پارٹی (پارٹی) کے امیدوار پشکر سنگھ دھامی، ریاستی پارٹی صدر مدن کوشک، اسمبلی اسپیکر پریم چند اگروال کے علاوہ کابینہ کے تمام اراکین، کانگریس کے قومی جنرل سکریٹری اور
سابق وزیر اعلیٰ ہریش راوت، ریاستی صدر گنیش گوڈیال اور دیگر شامل ہیں۔ سابق وزراء اور عہدے کے حامل وزراء بھی اپنی قسمت کا فیصلہ سننے کے لیے بے چین ہیں۔ پہلی بار،
عام آدمی پارٹی (اے اے پی) نے بھی تمام 70 سیٹوں پر امیدوار کھڑے کیے ہیں، جس میں اس کے وزیر اعلیٰ کے امیدوار رٹائرڈ کرنل اجے کوٹھیال اور دیگر کی قسمت کا فیصلہ بھی
ہو گا۔ ان کے علاوہ کانگریس اور بی جے پی کے باغی اور آزاد امیدواروں کی پوزیشن بھی صاف ہو جائے گی۔
پنجاب اسمبلی کی 117 نشستوں پر ووٹوں کی گنتی صبح 8 بجے شروع ہوئی۔ ریاست میں 66 مقامات پر گنتی کے مراکز قائم کیے گئے ہیں۔ گنتی کے مراکز کی سخت حفاظت کے
لیے تین درجاتی حفاظتی حصار بنایا گیا ہے جس کے لیے سنٹرل آرمڈ پولیس فورس کی 45 کمپنیاں تعینات کی گئی ہیں۔ اس کے علاوہ گنتی کے کام کے لیے ریاست میں تقریباً 7500
ملازمین کو تعینات کیا گیا ہے۔ ہر گنتی سنٹر پر میڈیا کی سہولت کے لیے میڈیا سنٹر بنائے گئے ہیں۔
قابل ذکر ہے کہ 117 اسمبلی سیٹوں کے لیے 20 فروری کو پولنگ ہوئی تھی۔ مختلف سیاسی جماعتوں اور آزاد امیدواروں سمیت کل 1,304 امیدوار میدان میں اترے جن میں 93
خواتین، دو ٹرانسجینڈر اور باقی 1,209 مرد ہیں۔
گوا قانون ساز اسمبلی کی 40 نشستوں کے لیے مختلف سیاسی جماعتوں کے 301 امیدوار میدان میں ہیں۔ ریاست میں صبح 8 بجے سے ووٹوں کی گنتی شروع ہو گئی ہے۔ تمام پولنگ
اسٹیشنز پر سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے ہیں اور سی سی ٹی وی کے ذریعے نگرانی کی جارہی ہے۔
منی پور قانون ساز اسمبلی کی 60 سیٹوں کے لیے ووٹوں کی گنتی آج صبح 8 بجے سخت حفاظتی انتظامات کے درمیان شروع ہوئی۔