کوویڈ ویکسینیشن کی پہلی خوراک کے بعد دوسری خوراک ضرور لیں: ضلع مجسٹریٹ

0

گیا:5اگست(ایجنسی) کوویڈ ویکسینیشن کو فروغ دینے کے لیے ضلعی انتظامیہ کی جانب سے ایک نئی پہل کی گئی ہے۔ اس کے تحت  ضلع میں پہلی بار ڈرائیو تھرو ویکسینیشن سنٹر شروع کیا جائے گا۔ ڈسٹرکٹ اسکول کیمپس کو ڈرائیو تھرو ویکسینیشن سنٹر کے لیے منتخب کیا گیا ہے۔ محکمہ صحت اور کیئر انڈیا کے تعاون سے اس کے لیے بڑے زور و شور سے تیاریاں کی جا رہی ہیں۔ 7 اگست کو ڈرائیو تھرو ویکسینیشن سنٹر کا افتتاح انڈسٹریز کم ڈسٹرکٹ انچارج وزیر شاہنواز حسین کریں گے۔
ڈی ایم نے ویکسینیشن میں تعاون کی اپیل کی:ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ ابھیشیک کمار نے عام لوگوں سے ویکسینیشن میں تعاون کی اپیل کرتے ہوئے کہا ہے کہ کورونا کے خلاف جنگ میں سب سے بڑا ہتھیار ویکسینیشن ہی ہے۔ ضلع کی تین میونسپل کونسلوں میں ٹکاری، بودھ گیا اور شیر گھاٹی شامل ہیں، 100 فیصد ویکسینیشن کا کام ہو چکا ہے۔
گیا میونسپل کارپوریشن میں 80 فیصد لوگوں کو ویکسین دی گئی ہے۔ ویکسینیشن کے حوالے سے عام لوگوں میں کافی جوش و خروش پایا جاتا ہے۔ ضلعی انتظامیہ کی جانب سے شہری علاقوں میں ڈرائیو تھرو ویکسینیشن کاؤنٹر ہفتہ سے شروع کیا جائے گا۔ یہاں ویکسینیشن کی سہولت صبح 7 بجے سے رات 9 بجے تک دستیاب رہے گی۔ انہوں نے ضلع کے لوگوں سے درخواست کی کہ وہ کوویڈ ویکسینیشن کی پہلی خوراک کے بعد دوسری خوراک لینے کو یقینی بنائیں۔ انہوں نے اس مہم میں شامل تمام لوگوں کا بھی شکریہ ادا کیا۔

گاڑی سے اترے بغیر ہی کرا سکیں گے ویکسینیشن:کوویڈ ویکسینیشن کے اس نئے قدم سے لوگوں میں جوش ہے۔ ڈرائیو تھرو کاؤنٹر لوگوں کے لیے خاص توجہ کا مرکز ہوگا۔ ڈرائیو تھرو ویکسی نیشن سنٹر کا مطلب ایسی جگہ ہے جہاں لوگ بغیر اپنی گاڑی سے اترے ویکسین حاصل کر سکتے ہیں۔ ضلع میں یہ پہلی ویکسینیشن مہم ہوگی جہاں بزرگ، معذور اور خواتین اپنی گاڑیوں سے ویکسی نیشن سینٹر آسکتے ہیں اور اپنی گاڑی میں ہی ویکسینیشن کروا سکتے ہیں۔ ڈرائیو تھرو ویکسینیشن کاؤنٹر اس بات کو ذہن میں رکھتے ہوئے تیار کیا گیا ہے کہ بوڑھے یا بیمار لوگ کسی اور کے ساتھ رابطے میں نہ آئیں اور ویکسینیشن کے دوران جسمانی دوری کے قوانین کو یقینی بنایا جا سکے۔ ڈرائیو تھرو کاؤنٹر پر لوگ اپنی گاڑیوں سے براہ راست آسکیں گے اور وہاں رجسٹر ہو سکیں گے اور گاڑی میں بیٹھ کرہی ویکسین بھی لے سکیں گے۔ اس کے بعدتیار شدہ مشاہدہ پارکنگ میں بھیجا جائے گا، جہاں وہ خود کو 30 منٹ تک گاڑی میں ہی مگر آبزرویشن میں رکھیں گے۔ اس قسم کا انتظام اس لیے کیا گیا ہے کہ ایسے لوگوں کے لیے زیادہ بھیڑ والے کاؤنٹر یا اسپتالوں کی قطاروں میں کھڑے ہونا مشکل ہے اور انہیں انفیکشن کا بھی خدشہ ہے۔ ایسے لوگوں کے لیے بغیر کسی خوف کے اپنی محفوظ گاڑی میں بیٹھ کر ویکسینیشن کروانے کی سہولت ہوگی۔
سینئر حکام کی نگرانی میں کام کیا جا رہا ہے:ڈرائیو تھرو ویکسی نیشن سنٹر سے متعلقہ ضروری تیاریاں ضلعی انتظامیہ اور کیئر انڈیا کے اعلیٰ عہدیداروں کی نگرانی میں کی جا رہی ہیں۔ وہیں ضلع ویکٹر بورن ڈیزیز آفیسر کم میڈیکل نوڈل آفیسر ڈاکٹر ایم ای حق اور ڈسٹرکٹ امیونائزیشن آفیسر کم سینئر نوڈل آفیسر ڈاکٹر سریندر چودھری کو کوویڈ ویکسینیشن کے کاموں کی نگرانی کی ذمہ داری سونپی گئی ہے۔
سیشن سائٹ پر خواتین کے لیے گلابی بوتھ ہوگا:کوویڈ ویکسینیشن سیشن کے پر چار خاص قسم کے کاؤنٹر ہوں گے۔ ان میں مردوں کے لیے ایک کاؤنٹر ہے اور دوسرا کاؤنٹر گلابی بوتھ کے طور پر تیار کیا گیا ہے۔ باقی دو دیگر کاؤنٹر معذوروں اور سینئر سٹیزنز کے لیے ہوں گے۔ کووی شیلڈ کی پہلی اور دوسری خوراک ویکسینیشن سینٹر پر ہی دی جائے گی.

آپ کے تاثرات
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here