یوپی میں سرکار بنی تو 300 یونٹ بجلی مفت:سسودیا

0
image:thestatesman.com

اترپردیش بجلی اتنی مہنگی کیوں ہے ؟
لکھنؤ / نئی دہلی (ایس این بی) : عام آدمی پارٹی نے اتر پردیش میں آئندہ اسمبلی انتخابات کے حوالے سے ایک اہم اعلان کیا ہے۔ یو پی میں عام آدمی پارٹی کی سرکار بننے کے بعد ہر خاندان کو 24 گھنٹوں کے اندر 300 یونٹ بجلی مفت ملنا شروع ہو جائے گی۔ جمعرات کوآپ سینئر لیڈر اور ممبر پارلیمنٹ سنجے سنگھ کے ہمراہ لکھنؤ میں منعقد پریس کانفرنس میں دہلی کے نائب وزیر اعلیٰ اور آپ کے سینئر لیڈر منیش سسودیا نے اعلان کیا کہ آئندہ اسمبلی انتخابات میں اتر پردیش میں عام آدمی پارٹی کی سرکار بننے کے 24 گھنٹوں کے اندر نہ صرف ہر خاندان کو 300 یونٹ بجلی مفت ملے گی، بلکہ تمام کسانوں کو مفت بجلی دی جائے گی۔ زرعی مقاصد کے لیے مفت بجلی دی جائے گی۔ اس کے ساتھ لوگوں کے تمام پرانے بقایا بل معاف کر دیے جائیں گے۔ اس موقع پر منیش سسودیا نے کہا کہ ریاست کے ہر گھر کو 24 گھنٹے بجلی فراہم کی جائے گی۔ ہم نے اسے دہلی میں کر کے دکھایا ہے، اب اتر پردیش کی باری ہے۔ انہوں نے کہا کہ آج اترپردیش کے تمام لوگ بجلی کے مہنگے بلوں سے پریشان ہیں۔ کسانوں کو دکھ ہے کہ ان کی فصلوں کی قیمت میں اضافہ نہیں کیا گیا بلکہ بجلی کے بلوں میں اضافہ کیا گیا ہے۔
اتر پردیش میں بجلی اتنی مہنگی ہو گئی ہے کہ لوگوں کو گھروں میں 1 لاکھ 1.5 لاکھ بل مل رہے ہیں اور ان کی ماہانہ آمدنی صرف 10 ہزار روپے ہے۔ سرکار بل ادا نہ کرنے پر انہیں مجرم قرار دے رہی ہے۔ بجلی کے مہنگے بلوں کی وجہ سے بہت سے لوگوں نے خودکشی کی۔ علی گڑھ کے کسان رام جی لال نے بجلی کے بل کی عدم ادائیگی کی وجہ سے خودکشی کرلی ، ایٹہ میں ایک 17 سالہ لڑکی نے خودکشی کی اور اپنے خودکشی نوٹ میں لکھا کہ میرے والد مجرم نہیں ہیں، وہ بجلی کا بل ادا نہ کرنے پر ان کو مجرم نہیں کہاجائے۔
منیش سسودیا نے کہا کہ اتر پردیش کے عوام کے ووٹوں کی طاقت کی وجہ سے ان کا بجلی کا بل زیرو ہوسکتا ہے۔ اترپردیش کے عوام کو آئندہ اسمبلی انتخابات میں عام آدمی پارٹی کا ساتھ دینا چاہیے اور ہم اس بات کی ضمانت دیتے ہیں کہ سرکار بننے کے 24 گھنٹوں کے اندر عوام کے لیے 300 یونٹ بجلی مفت کردی جائے گی۔ یہ اروند کجریوال کی ضمانت ہے۔ کجریوال جی جو کہتے ہیں ، وہ کر کے دکھاتے ہیں۔ اس کے ساتھ ریاست کے تمام کسانوں کو زرعی کاموں کے لیے مفت بجلی ملے گی۔
انہوں نے کہا کہ یوگی سرکار نے اترپردیش کے 38 لاکھ خاندانوں کو بجلی کے مہنگے بل بھجوائے ہیں اور انہیں مجرم قرار دے رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ اترپردیش کے لوگوں کو گھبرانے کی ضرورت نہیں ہے۔ عوام کو آپ کو فعال کرنے دیں اور ہم حکومت بنتے ہی عوام کے تمام بقایا بل معاف کر دیں گے۔ بجلی مہنگی کرکے عوام کو مجرم قرار دینے والی یوگی حکومت اصل مجرم ہے۔ جو بجلی مہنگی کر کے اپنا چندہ اکٹھا کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ آج اتر پردیش کے لوگ یہ دیکھ کر حیران ہیں کہ دہلی کے عوام کو بجلی کیسے مفت ملتی ہے۔ اتر پردیش میں عام آدمی پارٹی کو لوگوں سے محبت اور عزت مل رہی ہے۔ یہ سب اروند کیجریوال کی گڈ گورننس کا نتیجہ ہے۔
اروندکجریوال سرکارکے دہلی ماڈل کا ذکر کرتے ہوئے منیش سسودیا نے کہا کہ اروند کجریوال جی نے نہ صرف دہلی کے لوگوں کو مفت بجلی فراہم کی بلکہ بجلی کے طویل کٹوتیوں اور بلیک آؤٹ سے بھی چھٹکارا حاصل کیا۔ 2015 سے پہلے، دہلی کے گھر اور بازار میں انورٹر اور جنریٹرز سے بھرے ہوئے تھے۔ لیکن اروند کجریوال کی قیادت نے یہ نظریہ بدل دیا۔ آج دہلی میں 24 گھنٹے بجلی ہے۔ ہم اس بات کی ضمانت دیتے ہیں کہ دہلی کی طرح ، اترپردیش کے تمام گھر 24 گھنٹے روشن ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ دہلی کی اپنی کوئی بجلی نہیں ہے۔ دہلی سرکار،اتر پردیش اور دیگر ریاستوں سے بجلی خریدتی ہے ، اس کے باوجود دہلی کے عوام کو 24 گھنٹے بجلی ملتی ہے ، تو یہ اتر پردیش میں کیوں ممکن نہیں ہو سکتا۔ کیونکہ اتر پردیش سرکارکی نیت صاف نہیں ہے۔
مسٹر سسودیا نے کہا کہ اروند کجریوال جی عوام کے درد کو سمجھتے ہیں۔ وہ سمجھتے ہیں کہ کس طرح معیشت سے ٹیکنالوجی کو بہتر بنایا جا سکتا ہے۔ اروندکجریوال جی کا ماننا ہے کہ اکیسویں صدی میں بجلی لگڑری نہیں بلکہ بنیادی ضرورت ہے اور بنیادی ضروریات کو پورا کرنا حکومت کی ذمہ داری ہے اور دہلی حکومت اس ذمہ داری کو بخوبی نبھا رہی ہے۔ آج جب ہم ڈیجیٹل انڈیا کی بات کر رہے ہیں ، تب لوگوں کو اس ہندوستان میں مفت بجلی ملنی چاہیے۔

آپ کے تاثرات
+1
0
+1
0
+1
1
+1
0
+1
0
+1
0
+1
0

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here